ذکاءاشرف نے گورننگ بورڈ کی مخالفت کردی

ذکاءاشرف نے گورننگ بورڈ کی مخالفت کردی

 اسلام آباد (آن لائن)پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین چوہدری ذکاءاشرف نے بورڈ کے 60 سال سے زائد العمر ملازمین کی برطرفی کے بعد پی سی بی کے گورننگ بورڈ کی بھی مخالفت کرتے ہوئے گورننگ بورڈ تحلیل کرکے ایڈوائزری بورڈ تشکیل دینے کی کوششیں شروع کردی ہیں تفصیلات کے مطابق چوہدری ذکاءاشرف جنہیں اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے زرعی ترقیاتی بینک کے افسران کو برطرف کرنے پر شوکاز نوٹس جاری کیا گیا ہے نے پی سی بی گورننگ بورڈ کو تحلیل کرنے اور گورننگ بورڈ کی بجائے ایڈوائزری بورڈ تشکیل دینے کے لئے اپنے اثرورسوخ کا استعمال شروع کردیا ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ پی سی بی کا گورننگ بورڈ گیارہ اراکین پر مشتمل ہوتا ہے جس کے سربراہ چیئرمین کرکٹ بورڈ ہوتے ہیں جبکہ تیس اپریل 2012ءکو راولپنڈی، ایبٹ آباد، فیصل آباد ، سیالکوٹ اور کوئٹہ کرکٹ ریجنز کے سربراہان اپنی مدت پوری کرکے ریٹائرڈ ہوگئے تھے جن کی جگہ اسلام آباد ، پشاور ، لاہور ، کراچی اور ملتان کرکٹ ریجنز کے صدور کو پی سی بی گورننگ بورڈ میں شامل کیاجانا تھا تاہم ذکاءاشرف کی جانب سے اس عمل کو آگے بڑھنے سے روک دیا گیا ۔ ذرائع نے آن لائن کو بتایا کہ پی سی بی کی مالی مشکلات میں اضافے کے باوجود چوہدری ذکاءاشرف پرکشش مراعات اور تنخواہوں پر اپنی من پسند شخصیات کے تقرر میں مصروف ہیں اور دوسری جانب وہ گورننگ بورڈ کی جگہ پی سی بی کا ایڈوائزری بورڈ تشکیل دینے کیلئے سیاسی اثرورسوخ بھی استعمال کررہے ہیں اور جلد وہ اس حوالے سے ایک سمری کرکٹ بورڈ کے سرپرست اعلیٰ و صدر مملکت آصف علی زرداری کو بھجوانے کیلئے تیاریاں بھی شروع کردی ہیں ۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی