کوئٹہ‘زائرین کی بس میں دھماکے کیخلاف مختلف علاقوں میں شٹرڈاو¿ن ہڑتال کاروباری مراکز بند

کوئٹہ‘زائرین کی بس میں دھماکے کیخلاف مختلف علاقوں میں شٹرڈاو¿ن ہڑتال ...

کوئٹہ (اے پی اے ) کوئٹہ سوگ میں ڈوبا ہوا ہے، زائرین کی بس پر دھماکے کے خلاف شہر کے مختلف علاقوں میں شٹرڈاوین ہڑتال کی جارہی ہے۔ کاروباری مراکز بند اور سڑکوں پر ٹریفک معمول سے کم ہے۔14میں سے 11افراد کی نماز جنازہ جمعہ کی نما ز کے بعد ادا کردی گئی،ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی نے شٹرڈاوین کی اپیل اور پشتونخواءملی عوامی پارٹی، جمہوری وطن پارٹی ،، تاجر برادری نے حمایت کی ہے۔ زائرین کی بس پر حملے کے خلاف مجلس وحدت المسلمین تین روز کا سوگ منارہی ہے۔ شرپسندوں نے جمعرات کو دہشت گردی کی ہولناک کارروائی کرتے ہوئے ایران سے آنے والی زائرین کی بس کو نشانہ بنایا تھا جس میں چودہ مسافر جاں بحق اور تیس سے زائد زخمی ہوئے تھے۔ بم ڈسپوزل کے مطابق دھماکے میں چالیس سے پچاس کلو گرام بارود استعمال کیا گیا۔ادھرمجلس وحدت المسلمین کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ بلوچستان امریکا نواز دہشت گردوں کی آماجگاہ بن چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ دہشتگرد نا اسلام کے حامی ہیں اور نہ ہی پاکستان کے دوست ہیں۔دوسری طرف تحریک نفاذ فقہ جعفریہ صوبہ بلوچستان کے صدر سردار طارق احمد جعفری نے کوئٹہ شہر اور مقامات مقدسہ کی زیارت کے ر استوں کی نگرانی فوج کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ تفصیلات کیمطابق کوئٹہ کے علاقہ ہزار گنجی میںخود کش حملہ میں 14افراد کی ہلاکت کے خلاف جمعہ کو ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی کی کال پر شٹر ڈاون ہڑتال کی گئی ہڑتال کے باعث اہم کاروباری مراکز بند ،اور نظامِ زندگی متاثر جبکہ ٹریفک نہ ہونے کے برابر رہی ۔ادھر مذہبی و سیاسی جماعتوں نے کوئٹہ شہر اور مقامات مقدسہ کی زیارت کے ر استوں کی نگرانی فوج کے حوالے کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ واقعہ میں ملوث افراد کوگرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے۔ دوسری جانب ہزار گنجی میں زائرین کی بس پر خود کش حملہ کا مقدمہ شالکوٹ تھانے میں نامعلوم افراد کے خلاف درج کرلیا گیا۔ شیعہ تنظیموں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ان کے تحفظ کو یقینی بنائے اور اس قسم کے واقعات میں ملوث افراد کو گرفتار کر کے قرار واقعی سزا دی جائے۔دوسری جانب ہزار گنجی بس اڈے کے قریب ایران سے آنے والی زائرین کی بس کے قریب ہونے والے ریموٹ کنڑول بم دھماکے میں ایک پولیس اہلکار سمیت تیرہ افرادہلاک جبکہ تیس سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

مزید : صفحہ آخر