حکومت نے نیٹو سپلائی کی بحالی کا باقاعدہ فیصلہ کرلیا

حکومت نے نیٹو سپلائی کی بحالی کا باقاعدہ فیصلہ کرلیا

 اسلام آباد(ثناءنیوز ) حکومت نے نیٹو سپلائی کی بحالی کا باقاعدہ فیصلہ کر لیا ہے۔نجی ٹی وی کے مطابق اعلیٰ سطح ذرائع نے بتایا ہے کہ پاکستان اور امریکہ ایک ایسے لائحہ عمل پر کام کر رہے ہیں جس کے تحت ڈرون حملے مکمل طور پر بند کر دیئے جائیں گے ۔ذرائع کے مطابق نیٹو سپلائی کی بحالی کا معاملہ صرف امریکہ کی جانب سے سلالہ چیک پوسٹ پر معافی نہ مانگنے کے باعث روکا ہوا ہے اب امریکہ کی طرف سے معافی کی کوئی بھی صور ت قابل قبول ہو سکتی ہے دیگر نیٹو ممالک پاکستان کے معافی کے مطالبے کو تسلیم کر چکے ہیں مگر امریکہ معافی نہ مانگنے پر بضد ہے۔ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ لائحہ عمل مکمل ہونے میں وقت لگے گا اس بارے میں ٹائم فریم نہیں دیا جا سکتا اور آپریشنل سطح کے فیصلے اس لائحہ عمل کا حصہ بنیں گے۔ حقانی نیٹ ورک کے بارے میں ذرائع کا کہنا ہے حقانی نیٹ ورک صرف پاکستان کے ساتھ رابطے میں نہیں ہے بلکہ امریکہ سمیت پوری دنیا کی انٹیلی جنس ایجنسیاں حقانی گروپ کے ساتھ رابطے میں ہیں اس لیے پاکستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات معمول پر لانے کے لیے یہ کوئی بڑی شرط نہیں ہے۔پاکستان اور امریکہ کے درمیان تعلقات بہت جلد معمول پر آ جائیں گے۔ اعلیٰ پاکستانی ذرائع نے کہا کہ پاکستان،افغانستان میں امریکہ کی فتح چاہتا ہے اگر امریکہ افغانستان میں امن کے لیے ہی کام کر رہا ہے تو پاکستان امریکہ کی فتح ہی چاہتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر