سینٹ قائمہ کمیٹی کا وزارت خزانہ، ایف بی آر افسران کی عدم موجودگی پر برہم

سینٹ قائمہ کمیٹی کا وزارت خزانہ، ایف بی آر افسران کی عدم موجودگی پر برہم

  

اسلام آباد (این این آئی)سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے وزارت خزانہ کے افسران اور ایف بی آر افسران کی عدم موجودگی پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔ پیر کو سینیٹر فاروق ایچ نائیک کی صدارت میں سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس ہوا کمیٹی نے وزارت خزانہ کے افسران اور ایف بی آر افسران کی عدم موجودگی پر برہمی کا اظہار کیا۔ چیئر مین کمیٹی نے کہاکہ کورونا 19 سمگلنگ کی روک تھام کے بل کو وزارت خزانہ خود کہہ رہی ہے منی بل نہیں ہے، جب یہ منی بل نہیں ہے تو ہم کیسے اس کو ٹیک اپ کرسکتے ہیں،۔ چیئرمین کمیٹی نے کہاکہ اگر یہ منی بل نہیں ہے تو ہمارے پاس کیوں لایا گیا ہے، بل کے مندرجات کے مطابق یہ بل منی بل نہیں ہے۔ کمیٹی نے کہاکہ یہ بل دوبارہ ایوان بالا کو بھیجا جائے تاکہ اس پر دوبارہ قانون سازی ہو، یہ بل آئین کے آرٹیکل 73 کے زمرے میں نہیں آتا۔ چیئر مین نے کہاکہ ٹیکس لاء ترمیمی بل پہلے ہی فنانس بل کا حصہ ہے، فنانس بل 2020 میں تمام قوانین موجود ہیں پھر دوبارہ یہاں کیوں لایا گیا۔ کمیٹی نے کہاکہ کمیٹی کو جو دستاویز بھیجی گئی ہے اس کے مطابق اس بل پر کمیٹی گفت و شنید نہیں کرسکتی، اس بل میں موجود تمام مندرجات فنانس بل 2020 کا حصہ ہیں، وزارت خزانہ کی یہ قابلیت ہے کہ ہمیں بل بھیجتے ہیں جو کہ پہلے ہی فنانس بل کا حصہ ہے۔

قائمہ کمیٹی سینٹ

مزید :

صفحہ آخر -