پنجاب اسمبلی کی خواتین اراکین 2سال بعد بھی پارلیمانی رولز سے ناواقف

پنجاب اسمبلی کی خواتین اراکین 2سال بعد بھی پارلیمانی رولز سے ناواقف

  

لاہور(آئی این پی) پنجاب اسمبلی کی خواتین اراکین کا 2سال بعد بھی پارلیمانی رولز سے ناوقف ہونے کا انکشاف‘پنجاب اسمبلی میں سیاسی پوائنٹ سکورنک کی قراردیں جمع ہونے لگی‘حکومتی اور اپوزیشن خواتین میں قراردادیں جمع کرا نے کی ریس لگ گئی۔ پیر کو تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی میں بجٹ سیشن کے دوران بھی خواتین اراکین نے 35سے زائد قراردادیں اور تحریک التواجمع ہوگئی۔بجٹ اجلاس میں کوئی غیر سرکاری رکن کی قرارداد یا تحریک التواٹیک اپ نہیں ہوتی اس کے باوجود حکومتی اور اپوزیشن کی خواتین روزانہ سیاسی پوائنٹ سکورنگ کی قراردادیں جمع کرارہی ہیں۔بجٹ اجلاس کے دوران روزانہ قراردادیں جمع کرانے والی حکومتی خواتین میں مومنہ وحید،مسرت جمشید چیمہ،سمابیہ طاہراور سعدیہ سہیل رانا سرفہرست یادرہے سعدیہ سہیل دوسری مرتبہ رکن اسمبلی بنی ہیں،جبکہ مسلم لیگ (ن)کی خواتین میں رابعہ فاروقی،سعدیہ تیمور،ربعیہ نصرت،راحت افزااور سمیرا کومل سرفہرست ہیں۔اسمبلی سیکرٹریٹ کے مطابق اجلاس کے دوران کوئی قرارداد یا تحریک التوائے کار اسمبلی کاروائی کا حصہ نہیں بنتی۔جو ارکان اسمبلی اجلاس کے دوران قراردادیں اور تحریک التوائے کار جمع کراتے ہیں ان کا سب بزنس ضائع ہو جاتا ہے۔

پنجاب اسمبلی

مزید :

صفحہ آخر -