ملتان سمیت جنوبی پنجا ب میں گھنٹوں بجلی غائب‘ عوام سراپا احتجاج

    ملتان سمیت جنوبی پنجا ب میں گھنٹوں بجلی غائب‘ عوام سراپا احتجاج

  

ملتان، خانیوال،شاہ جمال(نیوز رپورٹر، نمائند ہ پاکستان)میپکو انتظامیہ کی جانب سے گرمی میں شدت آنے کے ساتھ ہی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور سپلائی میں بار بار کی ٹرپنگ سمیت گھنٹوں بجلی کا غائب ہونا روزانہ کا معمول ہوکر رہ گیا ہے اس پر ستم ظریفی یہ کہ بجلی کے تعطل(بقیہ نمبر47صفحہ6پر)

کی شکایات پر مامور عملہ بھی گرمی سے ستائے ہوئے شہریوں کی داد رسی و شکایات سننے کی بجائے تمام رابطے منقطع کرکے بے حسی کے سارے ریکارڈ توڑنے پر تلا ہوا ہے اور دوسری طرف میپکو صارفین بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور ٹرپنگ کی اذیت کو گرمی کی اس شدت کو بھگتنے پر مجبور ہیں میپکو عملہ کی بے حسی و صارفین سے لاتعلقی کی انتہا یہ ہے شام 7 بجے سے گلگشت سب ڈویڑن کے زیر اہتمام متعدد علاقے بجلی سے محروم ہیں لیکن مذکورہ سب ڈویڑن کے ایس ڈی او عمران شیخ سمیت تمام عملہ صارفین کو صورتحال سے آگاہی و تسلی دینے کی بجائے تمام رابطے منقطع کرکے بیٹھ جاتے ہیں جو صارفین کے لیئے مزید تشویش و لایقینی کی کیفیت کا باعث بنتا ہے گلگشت کے جن علاقوں پچھلے کئی گھنٹوں سے بجلی کی سپلائی معطل ہے وہاں کے صارفین نے پاکستان آفس فون کرکے بتایا ہے کہ ان کے علاقہ میں غیر اعلانیہ لوڈ شیدنگ معمول بنتی جارہی ہے جبکہ سب ڈویڑن کے ذمہ داران کے فون مصروف کردینے سے رابطہ نہیں ہوپاتا جس کے باعث شہری دہری اذیت سے دوچار ہوکر رہ جاتے ہیں انہوں نے مزید بتایا کہ بجلی کی بار بار ٹرپنگ سے گھریلو صارفین کو ہزاروں روپے مالیت کے گھریلو الیکٹرونکس سامان سے بھی محروم ہونا پڑ جاتا ہے جو کہ سراسر ذیادتی کے مترادف ہے صارفین نے میپکو حکام سے مطالبہ کیا ہے اس غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے شہریوں کو نجات دلانے سمیت ٹرپنگ کو کنٹرول کیا جائے جس سے صافین کا گھریلو الیکٹرونکس کا سامان محفوظ رہ سکے اور تمام سب ڈویڑنز کے ایس ڈی اوز سمیت دیگر عملہ کو صارفین کی کال رسیو کرنے اور انہیں بجلی سپلائی کے تعطل بارے آگاہی دینے کا پابند کیا جائے اور جو صارفین کے حقوق کی حق تلفی کا مرتکب ہو اس کے خلاف محکمانہ کاروائی کی جائے۔ جبکہ خانیوال اور گردونواح میں شدید گرمی اور حبس کا را ج ہے جبکہ گرمی کے ساتھ بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ بھی شروع ہوچکی ہے جس کے باعث عوام کا برا حال ہوچکا ہی گرمی کے ساتھ شہریوں نے ٹیوب ویلز اور سوئمنگ پولز کا رخ کرلیا ہے جہاں پر وہ ٹھنڈے پانی میں نہا کر گرمی کی شدت کوکم کرنے لگے ہیں نہانے والوں میں بڑوں کیساتھ ساتھ بچوں کو بڑی تعداد میں موجود ہے بچوں کا کہنا ہے کہ سکولز کی چھٹیاں ہیں اور گھروں میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ اور گرمی کی وجہ سے برا حال ہوچکا ہے جس کی وجہ سے نہانے آئے ہوئے ہیں۔ادھر وولٹیج کی کمی اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کیخلاف نوجوانوں کی احتجاجی ریلی اور دھرنا پولیس کی مداخلت ایس ڈی او سیکامیاب مذاکرات میں وولٹیج میں بہتری اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کی یقین دہانی پر احتجاج ختم۔عرصہ دراز سے شاہ جمال میں دو سو چالیس،دو سو بیس کی بجائے ئے ستر تا سو تک وولٹیج فراہم کئیے جا رہے ہیں اندرون شہر مقیم ڈیڑھ تا دو مرلہ کے مکانات میں مقیم شہری سخت مشکلاتکا شکار تھے کیو نکہ اتنے چھوٹے گھروں میں پانی کے نلکے تک موجود نہیں جبکہ پانی کے حصول کا واحد ذریعہ واٹر پمپس ہیں وولٹیج کم ہونے کی وجہ سے واٹر پمپ تو دور پنکھے تک نہیں چلتے پانی کی عدم دستیابی اور سخت گر می سے تنگ نوجوان کئی روز تک سوشل میڈیا پر مہم کے بعد آج پلے کارڈز جن پر درج تھا کہ جب بجلی کا بل پورا وصول کیا جاتا ہے تو بجلی کم کیوں دی جاتی ہے اسطرح کے دیگر نعرے درج تھے اٹھا کر ریلی کی شکل میں واپڈا افس شاہ جمال پہنچے دو گھنٹے تک دھرنا دیا جن سے راشد رانا،رحمت اقبال،ایوب فرید اور راشد عبدالقادر سمیت دیگر نے خطاب کیا اس دوران ایس ایچ او تھا نہ شاہ جمال اور رانا الیاس فرحت کی کوششوں سیایس ڈی او جاوید حنیف نے نو جوانوں کے تحفظات دور کرنے اور مسائل حل کرنے کی با بت یقین دہانی کے لئے انہیں بریفنگ دینے کی درخواست کی جس پر آرگنائزرز حاجی امجد اعوان،رحمت اقبال راجپوت،ملک فاروق فضل عاربی اور راشد رانا پر مشتمل کمیٹی میپکو سب ڈویڑن شاہ جمال دفتر پہنچی تو ایس ایچ او تھا نہ شاہ جمال غلام ادریس خان بھی پہنچ گئے اس دوران ایس ڈی او نے جلد وولٹیج کا مسئلہ حل کرانے کی یقین دہا نی کرائی اور گرڈ اسٹیشن کی جلد تعمیر کی خو شخبری بھی سنائی جس پر احتجاجی دھرنا ختم کر دیا گیا دوران احتجاج نو جوانوں نے ماسک اور گلوز پہننے اور سماجی فاصلہ برقرار رکھنے کو یقینی بنایا۔

لوڈشیڈنگ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -