پشاور‘ ایس ایس پی آپریشنز سے کرائم رپورٹرز کی ملاقات

پشاور‘ ایس ایس پی آپریشنز سے کرائم رپورٹرز کی ملاقات

  

پشاور(کرائمز رپورٹر) ایس ایس پی آپریشن منصور امان نے گزشتہ روز ملک سعد شہید پولیس لائنز پشاور میں کرائم رپورٹرز کیساتھ خصوصی ملاقات کی ہے، ملاقات کے دوران انہوں نے کرونا وائرس سے شہید ہونے والے صحافی فخرالدین کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے ان کے لئے دعائے مغفرت کی،اس موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ایس ایس پی آپریشن نے صحافت کو ریاست کا اہم ستون قرار دیا، انہوں نے واضح کیا کہ صحافیوں سے ملاقات کا مقصد پولیس کے مثبت تشخص کو اجاگر کرنے سمیت درپیش مسائل کے فوری حل اور معاشرے میں موجود سماج دشمن عناصر اور معاشرتی برائیوں کی نشاندہی کر کے ان کا سد باب کرنا ہے، پولیس اور صحافیوں کا چولی دامن کا ساتھ ہے،پشاور میڈیا نے ہمیشہ پولیس کا ساتھ دیا، امید ہے میڈیا آئندہ بھی جرائم کی روک تھام اور نشاندہی میں اپنا مثبت کردار ادا کریں گے، میڈیا اور تمام سٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر شہریوں کے عزت نفس کی بحالی اور ان کے جان و مال کی حفاظت کی خاطر کام کرنا ترجیحات میں شامل ہے تفصیلات کے مطابق ایس ایس پی آپریشن کیپٹن (ر) منصور امان نے ملک سعد شہید پولیس لائن میں صحافیوں کیساتھ خصوصی ملاقات کی ہے، ملاقات کے دوران ایس ایس پی آپریشن نے گزشتہ دنوں کرونا وائرس سے شہید ہونے والے صحافی فخرالدین کی صحافتی خدمات پر ان کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کے ایصال ثواب کے لئے دعائے مغفرت کی،ملاقات میں موجود کرائم اینڈ ٹیرارزم جرنسلٹ فورم سے وابستہ صحافیوں نے ایس ایس پی آپریشن سے مختلف امور پر بات چیت کرتے ہوئے اصلاح احوال کی خاطر مختلف تجاویز بھی پیش کئے جس پر ایس ایس پی آپریشنز نے ترجیحی بنیادوں پر عمل کرنے کی یقین دہانی کرائی، اس موقع پر ایس ایس پی آپریشنز نے سماجی برائیوں کی نشاندہی اور جرائم کی روک تھام میں میڈیا کے مثبت کردار کی تعریف کرتے ہوئے میڈیا کو ریاست کا اہم ستون قرار دیا، انہوں نے پشاور میڈیا کے کردار اور معاشرتی مسائل کے حل اور معاشرے میں پولیس کے مثبت تشخص کو اجاگر کرنے کی خاطر ان کے کردار کو بھر انداز سے سراہا، انہوں نے غیر رسمی بات چیت کے دوران واضح کیا کہ شہر میں امن و امان کی صورتحال میں مزید بہتری لانے کی خاطر اسٹریٹ کرائمز میں ملوث عناصر سمیت قبضہ مافیہ کے خلاف کام کرنا ترجیحات میں شامل ہے، انہوں نے خواتین کے مسائل کوحل کرنے کی خاطر تھانوں میں خواتین ڈیسک کو مزید فعال کرنے سمیت محرر سٹاف میں تجربہ کار، اعلی تعلیم یافتہ اوراچھے کردار کے حامل اہلکاروں کو تعینات کرنے کا بھی عندیہ دیا، انہوں نے تھانوں پر چیک اینڈ بیلنس رکھنے کی خاطر سی سی ٹی وی کیمروں کو مزید موثر بنانے اور امن و امان کی صورتحال کو مزید بہتر بنانے کی خاطر کمیونٹی پولیسنگ کی ضرورت پر زور دیا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -