کوروناکے بعد بقاء اور استحکام کو سنگین خطرات لاحق ہیں، سعید غنی

کوروناکے بعد بقاء اور استحکام کو سنگین خطرات لاحق ہیں، سعید غنی

  

کراچی(این این آئی) وزیرمحنت وتعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ کووڈ19 بحران سے پیدا ہونے والی صورتحال سے نمٹنے کے لیے جنوبی ایشیائی ممالک کی حکومتوں، نجی شعبوں اورر سول سائٹی سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بے روزگاری، روزگار کومحفوظ بنانے اور مستقبل کے امور پر توجہ دیتے ہوئے ان کے حل کے لیے مشترکہ لائحہ عمل تیار کرنے میں مدد کریں کیونکہ کووڈ19کے بعد کے دور میں بقا اور استحکام کو سنگین خطرہ لاحق ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وڈیو لنک کے ذریعے آن لائن ”یو این گلوبل کمپیکٹ لیڈرز سمٹ“ میں شرکت کے موقع پر کیا۔انہوں نے کوروناوبا کے پھیلاؤ کی روک تھام سے متعلق حکومت پاکستان کے اقدامات پر تفصیل سے روشنی ڈالی۔جرمن چانسلرانجیلا مارکل اور بوٹسوانا، کولمبیا اور کوسٹا ریکا اوت ایتھوپیا کے صدور نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر اور سیکریٹری،درجنوں چیف ایگزیکٹیوز اور اقوام متحدہ کے سربراہان کے ساتھ ”یو این گلوبل کمپیکٹ لیڈرز سمٹ“ میں شرکت کی جس کا مقصد 3 غیرمعمولی بحرانوں صحت، عدم مساوات اور موسمیاتی تبدیلی پر نجی شعبے کی ردعمل پر توجہ دینا تھا۔ 26گھنٹوں سے زیادہ متواتر ورچوئل پروگرامنگ جس میں 100سے زائد عالمی، علاقائی اور مقامی سیشنز شامل تھے۔یہ سمٹ اقوام متحدہ کا سب سے بڑا، پرہجوم اور سب سے پائیدار کنونشن تھا جس میں معاشرتی چیلنجزسے نمٹنے اور پائیدار ترقی یقینی بنانے کا عزم کیا گیا۔مزید برآں 180سے زائد ممالک کے کاروباری رہنماؤں نے اپنی مقامی اوقات اور زبانوں میں شرکت کی۔

سعید غنی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -