""میرے پاکستانیو آپکا کپتان گھبرا گیا ہے۔۔""عابد شیر علی نے وزیر اعظم عمران خان پر تنقید کی تمام حدیں کراس کردیں

""میرے پاکستانیو آپکا کپتان گھبرا گیا ہے۔۔""عابد شیر علی نے وزیر اعظم عمران ...

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق  وفاقی وزیر عابد شیر علی نے کہا ہے کہ مائنس عمران کی باتیں کیاشروع ہوئی ""سلیکٹڈ خان ""نے آج اسمبلی میں نواز شریف ،نواز شریف شروع کر دیا،چند روز قبل عمران خان کا قومی ایئر لائن کے بارے موقف تھا کہ پی آئی اے منافع میں جا رہی ہے تب کیا خان نشہ کر کے جہاز اُڑاتا تھا ؟نواز شریف کا صبر ابھی بہت سوں کولے ڈوبے گا۔

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پرٹویٹ کرتےہوئےعابد شیرعلی کاکہناتھاکہ عمران خان نےپی آئی اے کو جس کے بارے حکومت کاکچھ دن پہلےموقف تھاکہ پہلی بارمنافع میں جارہی ہے،تب کیاخان نشہ کرکےجہازاُڑاتاتھا؟جعلی لائسنس کاشوشہ چھوڑ کرپاکستان کےسرکاری ادارے کوبدنام کراکرپابندی اس لئےلگوائی ہےکہ خان پہلے اپنی کسی "اے ٹی ایم" کو اُونے پونے بیچ سکے۔

انہوں نے کہا کہ میرے پاکستانیو آپکا کپتان گھبرا گیاہے،کل تک کینٹینر پرنواز شریف سےاستعفی مانگنےوالامائنس نواز شریف کے لیے126دن دھرنادینےوالاآج خود اپنے مائنس ہونے کی بات کررہا ہے،مائنس عمران کی باتیں کیاشروع ہوئی"سلیکٹڈ خان "نے آج اسمبلی میں نواز شریف ،نواز شریف شروع کر دیا،خان کواپنی زندگی سے سبق سیکھنا چاہیے،جو گھڑا وہ نواز شریف کے لیے کھود رہا تھا آج اس میں خود گِر گیا ہے،نواز شریف کا صبر ابھی بہت سوں کولے ڈوبے گا۔عابد شیرعلی نے کہا کہ  پٹرول کی امپورٹ کا ٹھیکہ پی ایس او سے لے کر ندیم بابر (شئیر ہولڈر) کی کمپنی ہیسکول کو دیا گیا، جس نے مارکیٹ میں صرف 25 فیصد پٹرول دیا اور باقی 75 فیصد سٹاک کر لیا،سرکاری کمپنی سے امپورٹ کا حق چھین کر پرائیویٹ اور غیر ملکی کمپنی کو ٹھیکہ دینے کی کیا منطق تھی؟جولائی کےلئےاوگراکی سمری اور تجویز مزید 7 روپےکمی کی بھی موجود ہے،تمام فیصلے وزیراعظم کی صوابدید کے بنا ممکن ہی نہیں،رولز آف بزنس یا ایس او پیز کو بار بار توڑا گیا،چاہے ہیسکول کو ٹھیکہ دینے کی بات ہو یا پٹرول کی قیمت میں اوگرا کو بائی پاس کرنے کی؟اب ہمیں کوئی یہ تو بتلائے کہ کیا یہ ممکن ہے کہ وزیراعظم نےاس سب گھٹالے میں اپنا حصہ نہ لیا ہو؟کیوں مان لیا جائےکہ وزیراعظم بغیرکسی لالچ کےاتنےبڑےگھٹالےکولےکےچلا؟کیاوزیراعظم دودھ پیتا بچہ ہےکہ جو نہیں جانتا کہ سرکاری کمپنی ملکی مفاد سے ہٹ کر کبھی کوئی بڑا فراڈ نہیں کرسکتی۔

مزید :

قومی -