خاتون اغوا، عسکریت پسند انسانی گوشت پکوا کر  کھلاتے رہے، رہا ہو کر گھر جانے لگی تو راستے میں دوسرے گروپ نے اغوا کرلیا،  دل دہلا دینے والی کہانی 

خاتون اغوا، عسکریت پسند انسانی گوشت پکوا کر  کھلاتے رہے، رہا ہو کر گھر جانے ...
خاتون اغوا، عسکریت پسند انسانی گوشت پکوا کر  کھلاتے رہے، رہا ہو کر گھر جانے لگی تو راستے میں دوسرے گروپ نے اغوا کرلیا،  دل دہلا دینے والی کہانی 

  

نیو یارک (ڈیلی پاکستان آن لائن) اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں انسانی حقوق کے ایک گروپ نے انکشاف کیا ہے کہ جمہوریہ کانگو میں ایک خاتون کو عسکریت پسندوں نے دو بار اغوا کیا ، اس سے انسانی گوشت پکوا کر اسے ہی کھلایا اور بار بار اس کے ساتھ زیادتی کی۔

انڈیا ٹوڈے کے مطابق کانگو میں بڑھتے ہوئے تشدد کے واقعات پر سلامتی کونسل کا اجلاس ہوا۔  سلامتی کونسل سے خطاب کرتے ہوئے  خواتین کے حقوق کے گروپ کی صدر جولین لوسینج نے  بتایا کہ  ایک خاتون عسکریت پسندوں کو اپنے فیملی ممبر کو چھڑوانے کیلئے تاوان کی رقم ادا کرنے گئی تو اسے بھی اغوا کرلیا گیا۔ اس خاتون پر نہ صرف جسمانی تشدد کیا گیا بلکہ اس کے ساتھ بار بار زیادتی کی جاتی رہی اور اس کے سامنے ایک شخص کو گلا کاٹ کر قتل بھی کیا گیا۔

جولین لوسینج کے مطابق اغوا کاروں نے  مغوی خاتون سے مقتول شخص کا گوشت پکانے کا کہا اور پھر تمام قیدیوں کو اس کا گوشت کھلایا۔  طرح طرح کے مظالم کے بعد عسکریت پسندوں نے خاتون کو رہا کردیا لیکن گھر کے راستے میں ہی اسے ایک اور شدت پسند گروہ نے اغوا کرلیا  جہاں اس کا پھر ریپ کیا گیا۔ ان شدت پسندوں نے بھی مغوی خاتون سے انسانی گوشت پکوایا، خوش قسمتی سے خاتون اغوا کاروں سے کسی طرح بچ کر فرار ہونے میں کامیاب ہوگئی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -