کاروباری برادری نگران حکومتوں کی جمہوری طریقے سے تشکیل کی بھرپور تائید کرتی ہے ‘منظر خورشید شیخ

کاروباری برادری نگران حکومتوں کی جمہوری طریقے سے تشکیل کی بھرپور تائید کرتی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


روالپنڈی(نیٹ نیوز) راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر منظر خورشید شیخ نے کہا ہے کہ مرکز اور صوبوں میں ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ نگران حکومتوں کی جمہوری طریقے سے تشکیل کی کاروباری برادری بھرپور تائید کرتی ہے اور پوری قوم کو جمہوری عمل کی کامیابی پر مبارکباد پیش کرتی ہے ،نگران حکومت کے لئے چیلنجز بے شمار ہیں جن میں سب سے اہم مسئلہ الیکشن کے تمام مراحل کا بخیر و خوبی سر انجام دینا اوراسکے لئے امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنانابہت ضروری ہو گا، نگران حکومت کو معاشی پالیسیوں کے حوالے سے بھی مسائل کا سامنا کرنا پڑے گا کیونکہ چارماہ میں آئی ۔ایم ۔ایف کی تین اقساط کی لازمی ادائیگی ،بجٹ ، معاشی زبوں حالی اور توانائی بحران جیسے مسائل حکومت کے لئے بڑا چیلنج ثابت ہوں گے، کاروباری برادری اس مشکل وقت میں نگران حکومت کا بھرپور ساتھ دے گی تا کہ جمہوری عمل کوخوش اسلوبی سے سر انجام دیا جا سکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے چیمبر میں تاجروں و صنعتکاروں کے ایک وفد سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
اس موقع پر سینئر نائب صدر پرویز احمد ورائچ،نائب صدر ندیم رﺅف ،گروپ لیڈر نجم الحق ملک اور دیگر اراکین بھی موجود تھے۔ منظر خورشید نے کہا کہ نگران حکومت کو چارج سنبھالتے ہی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا کیونکہ پچھلی حکومت نے مسائل کے حل کی طرف توجہ نہیں دی ، کاروباری برادری مطالبہ کرتی ہے کہ موجودہ حکومت پالیسیوں کی تشکیل میں کاروباری برادری کی مشاورت کو یقینی بنائے تا کہ اسٹیک ہولڈرز کی شمولیت سے عملدرآمد کو ممکن بنایا جا سکے۔ انہوںنے کہا کاروباری برادری ملک میں استحکام چاہتی ہے تا کہ بیرونی سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال کر کے ملک میں سرمایہ کاری کے کلچر کو فروغ دے کر ملک کے لئے ریونیو حاصل کیا جا سکے۔ صدر آر سی سی آئی نے کہا کہ ملک میں کاروباری سرگرمیوں میں اضافے کے لیے نئی حکومت کو محنت کرنی پڑے گی ، پالیسیوں میں بزنس کمیونٹی کو شامل کیا جائے تا کہ کاروباری طبقہ کے مسائل کو صحیح طور پر سامنے لایا جا سکے،ماضی میں کاروباری برادری کو مشاورتی عمل میں شامل نہیں کیا گیا امید ہے آنے

مزید :

کامرس -