محکمہ خوراک نے لاہور سے گندم کا سٹاک ختم کر کے بحران پیدا کر دیا،میاں ریاض

محکمہ خوراک نے لاہور سے گندم کا سٹاک ختم کر کے بحران پیدا کر دیا،میاں ریاض

لاہور (کامرس رپورٹر)پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن (پنجاب) کے سابق چےئرمین میاں ریاض احمد نے کہا ہے کہ محکمہ خوراک پنجاب نے لاہور سے گندم کا سٹاک ختم کر کے آٹے کا بحران پیدا کر دیا ہے، گندم کی قلت کے باعث لاہور کی فلور ملوں کو فی باڈی 25 بوری کوٹہ تک محدود کر دیا ہے ، محکمہ خوراک پنجاب کے بعض افسران وزیر اعلی پنجاب کی ساکھ خراب کرنے پر تلے ہوئے ہیں،وزیر اعلی پنجاب محکمہ خوراک کے ان اقدامات کا فوری طور پر نوٹس لیں ،پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن پنجاب کے سابق چےئرمین و رہنما میاں ریاض نے گزشتہ روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چند ہفتے قبل محکمہ خوراک پنجاب نے لاکھوں ٹن معیاری گندم من پسند افراد کو اربوں روپے کی سبسڈی کے ساتھ ایکسپورٹ کیلئے دے دی تھی جبکہ لاہور کی فلور ملوں کیلئے گندم کی شارٹیج پیدا کر کے انہیں غیر معیاری اور پچھلے کئی سالوں کی پڑی ناقص گندم اٹھانے پر مجبور کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ گندم کی قلت کا بہانہ بنا کر لاہور کی فلور ملوں کو فی باڈی 25 بوری تک محدود کر دیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ لاہور میں 80 فلور ملیں ہیں جبکہ روزانہ کی بنیاد پر 1 لاکھ 35 ہزار ( 20 کلوگرام) آٹے کے تھیلے مارکیٹ میں عوام کی ضرورت کے مطابق فروخت ہوتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ پنجاب فوڈ ڈیپارٹمنٹ کے بعد افسران پنجاب حکومت کی کارکردگی کو صفر کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور ایسے حربے استعمال کررہے ہیں جس سے حکومت ،عوام اور انڈسٹری کے درمیان خلاء پیدا کی جا سکے۔

،انہوں نے کہا کہ ہم کسی بھی صورت ناقص اور غیر معیاری گندم جو انسانی صحت کے لئے نقصان دہ اور حفظان صحت کے اصول کے برخلاف ہے نہیں اٹھائیں گے۔انہوں نے وزیر اعلی پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پرگندم اور آٹے کی قلت پیدا کرنے پر محکمہ خوراک پنجاب کے افسران کی کارستانیوں کا نوٹس لیں جو لاہور کے عوام کی زندگیوں سے کھیلنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...