ملاکنڈ،درگئی پلئی میں سیمنٹ فیکٹری کے قیام کے منصوبے کو چیلنج کر دیا گیا

ملاکنڈ،درگئی پلئی میں سیمنٹ فیکٹری کے قیام کے منصوبے کو چیلنج کر دیا گیا

پشاور(نیوزرپورٹر)ملاکنڈکے علاقہ درگئی پلئی میں سیمنٹ فیکٹری کے قیام کے منصوبے کو پشاورہائی کورٹ میں چیلنج کردیاگیاہے اورموقف اختیارکیاگیاہے کہ فیکٹری کے قیام سے نایاب پھلوں کے باغات متاثرہوں گے اورماحولیاتی آلودگی بڑھے گی جبکہ عدالت عالیہ کے جسٹس قیصررشید نے ملاکنڈ سے تعلق رکھنے کی بناء رٹ سماعت کے لئے دوسرے بنچ کو ارسال کردی عدالت عالیہ کے جسٹس قیصررشید اور جسٹس ایوب خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے امیرنواب وغیرہ ساکنان درگئی پلئی کی جانب سے علی گوہردرانی ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائررٹ کی سماعت کی اس موقع پر عدالت کو بتایاگیاکہ حکومت نے پلئی میں800جریب اراضی پرسیکشن 4نافذ کرکے اس کی خریدوفروخت پرپابندی عائد کی ہے جہاں سیمنٹ پلانٹ لگایاجارہا ہے تاہم مذکورہ مقام پر سیمنٹ پلانٹ کے قیام سے ڈیڑھ لاکھ سے زائد نایاب مالٹے کے درخت ٗ 80ہزار سے زائدآڑو کے درخت اوردیگرپھلوں کے 60ہزار سے زائد درخت کاٹے جائیں گے جبکہ اس علاقے کے ٹماٹرپورے ملک کے بہترین ٹماٹر قرار دئیے جاتے ہیں اوراس طرح مذکورہ پھلدار اراضی متاثرہورہی ہے انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اگست میں سیکشن 4عائد کیاگیااورنومبرمیں اس میں ترمیم کی گئی اس اقدام سے ماحولیاتی مسئلہ پیداہوگا لہذاسیکشن فورکالعدم قرار دیاجائے اس موقع پرجسٹس قیصررشید نے کہاکہ چونکہ وہ اس علاقے کے ہیں اس بناء رٹ کی سماعت نہیں کرسکتے اورسماعت کے لئے دوسرے بنچ کو منتقل کردی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر