انتخابی فہرستوں پر نظر ثانی کا آخری مرحلہ، ضلع ملتان میں 197 ڈسپلے سنٹر قائم

انتخابی فہرستوں پر نظر ثانی کا آخری مرحلہ، ضلع ملتان میں 197 ڈسپلے سنٹر قائم

ملتان(سپیشل رپورٹر ) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے انتخابی فہرستوں پر نظر ثانی کے آخری مرحلے کا آغاز کر دیا ہے۔ عام انتخابات 2018 ء کی تیاریوں کے سلسلے میں ڈسٹرکٹ الیکشن (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

کمشنر ملتان نے ووٹ کے اندراج ، اخراج اور کوائف کی درستگی کے لئے ضلع ملتان میں 97 ڈسپلے سنٹرز قائم کر دیئے ہیں۔ اس سلسلے میں تحصیل ملتان سٹی میں 58 ،تحصیل ملتان صدر میں 22 ، تحصیل شجاع آباد میں 9 اور تحصیل جلال پور پیر والا میں 8 ڈسپلے سینٹر قائم کیے ہیں۔ ان ڈسپلے سنٹرز پر انتخابی فہرستیں 26 مارچ سے 24 اپریل 2018 ء تک آویزاں رہیں گی ۔ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر ملتان نے بتایا کہ الیکشن کمشن آف پاکستان نادرا کے تعاون سے اس امر کو ضروری بنا رہا ہے کہ الیکشن 2013 ء کے بعد سے لے کر سا ل 2018 ء تک جن شہریوں نے نئے شناختی کارڈ بنوائے ہیں۔ ان کے ناموں کے اندراج کو ابتدائی انتخابی فہرستوں میں یقینی بنایا گیا ہے۔ ایسے تمام ووٹروں کے ووٹ حذف کئے ہیں جن کی نادرا کے ریکارڈ میں فوتگی درج ہے یا وہ پاکستان کی شہریت ترک کر چکے ہیں یا کسی بھی وجہ سے ان کی شناختی کارڈ منسوخ کر دیئے گئے ہیں۔ نئے ووٹروں کے اندراج اور فوت شدہ ووٹوں کے اخراج کے بعد ابتدائی انتخابی فہرستیں تیار کی گئی ہیں اور انہیں ڈسپلے سنٹرز میں عوام الناس کے معائنہ کے لئے رکھا گیا ہے۔ شہریوں کو موقع فراہم کیا گیا ہے کہ وہ اپنے اور اپنے اہل خانہ کے ابتدائی انتخابی فہرستوں میں درج ووٹوں کی جانچ پڑتال کریں اور ضرورت محسوس ہو تو اندراج اور درستگی کروائیں۔فہرستوں پر اعتراضات سننے کے لئے ضلع ملتان میں 4 نظر ثانی آفیسر (ہر تحصیل میں ایک) مقرر کیے گئے ہیں جو کہ اپنی متعلقہ تحصیل کے ڈسپلے سنٹرز پر دائر اعتراضات کی سماعت کریں گے اور 30 اپریل تک ان اعتراضات کے متعلق فیصلے کریں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر