روس کی انسداد دہشتگردی کیلئے پاکستان کو تکنیکی معاونت کی پیشکش

روس کی انسداد دہشتگردی کیلئے پاکستان کو تکنیکی معاونت کی پیشکش
روس کی انسداد دہشتگردی کیلئے پاکستان کو تکنیکی معاونت کی پیشکش

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) روس نے انسداد دہشتگردی کے شعبے میں پاکستان کو تکنیکی معاونت فراہم کرنے کی پیش کش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے دہشتگردی کے خلاف بڑے پیمانے پر کارروائیاں کی ہیں، روس اس حوالے سے اپنی مہارت فراہم کرنے کوتیار ہے۔ رو س کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل سرگئی اور چیف کونسلر برائے صدارتی انتظامیہ والری مولوسٹو ف نے جمعرات کو قومی سلامتی مشیر ناصر جنجوعہ سے یہاں ملاقات کی۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روسی وفد نے کہا کہ ان کا ملک پاکستان کو جنوبی ایشیاءمیں اپنا قابل اعتماد شراکت دار سمجھتا اور تمام شعبوں میں تعاون کے فروغ کی خواہش رکھتا ہے۔ روس اسی طرح سے اقوام متحدہ اور شنگھائی تعاون تنظیم میں بھی پاکستان کو حمایت فراہم کررہا ہے۔ علاوہ ازیں مشیر قومی سلامتی ناصر جنجوعہ نے یورپی یونین کے سفیر چین کوٹین سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افغان جاری تنازع پیچیدہ ہے جس کے حل کیلئے مشترکہ کاوشیں درکار ہیں، ملاقات میں دو طرفہ تعاون پر اتفاق کیا گیا۔

ناصر جنجوعہ نے کہا کہ افغان صدر کی امن پیشکش نادر موقع ہے۔ سفیر نے کہا کہ یورپی یونین، افغانستان اور خطے میں دیرپاامن کیلئے معاونت کے گا، پاکستان کودرپیش چیلنجز اور نمٹنے کیلئے پاکستانی عزم قابل ستائش ہے۔ مشیر قومی سلامتی سے صومالی صدر کے مشیر برائے خارجہ امور بلال عثمان نے بھی ملاقات کی، قومی سلامتی کے مشیر ناصر خان جنجوعہ نے یہاں کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو اپنے سٹریٹجک اثاثوں کو سائبر حملوں سے محفوظ رکھنا بہت اہم ہے، ہمیں انفرادی طور پر سائبر کرائمز سے نمٹنے کے لئے اپنی پرائیویسی برقرار رکھنے کیلئے موثر اقدامات کی ضرورت ہے۔

کانفرنس سے سائبر سکیورٹی ملائیشیا کے چیف ایگزیکٹو ڈاکٹر امین الدین عبدالوہاب اور پاکستان انفارمیشن سکیورٹی ایجنسی کے صدر عمار جعفری نے بھی خطاب کیا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد