’’ خوابوں کے شہنشاہ ‘‘ منظور وسان نے ایک بار پھر ایسا’’خواب ‘‘ دیکھ لیا کہ جس کی ’’تعبیر ‘‘ ایم کیو ایم کی صفوں میں کھلبلی مچا دے گی

’’ خوابوں کے شہنشاہ ‘‘ منظور وسان نے ایک بار پھر ایسا’’خواب ‘‘ دیکھ لیا ...
’’ خوابوں کے شہنشاہ ‘‘ منظور وسان نے ایک بار پھر ایسا’’خواب ‘‘ دیکھ لیا کہ جس کی ’’تعبیر ‘‘ ایم کیو ایم کی صفوں میں کھلبلی مچا دے گی

  

سکھر(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور ’’خوابوں کے شہنشاہ‘‘ کہلانے والے سندھ کے وزیر صنعت وتجارت منظور حسین وسان نے آئندہ عام انتخابات میں پیپلز پارٹی کے کراچی سے 20 سے زیادہ سیٹیں جیتنے،مصطفے کمال اور فاروق ستار کے آپس میں ملنے اور ایم کیو ایم کے دوبارہ ایک ہونے کے ایک ساتھ کئی خواب دیکھتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی کا ووٹ بنک اب پیپلزپارٹی کی طرف ہوگیا ہے، پہلے کراچی میں ووٹ دھونس اور دھاندلی پر لیا جاتا رہا ہے۔

سکھر ایئرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے منظور وسان  کا کہنا تھا کہ اپریل کا مہینہ اہم ہے اور اس میں بھٹو شہید کی برسی کے ساتھ بہت اہم فیصلے ہونے جارہے ہیں، اس مہینے میں احتساب کا عمل بھی جاری رہے گا جبکہ نگران وزیر اعظم کوئی غیر معروف شخصیت ہوگی جسے خیبر پختونخواہ یا بلوچستان سے لانے کی کوشش کی جائے گی ۔ان کا کہناتھا کہ جلد ایم کیو ایم ایک ہوگی، پہلے مرحلے میں مصطفے کمال اور فاروق ستار ملیں گے اور دوسرے مرحلے میں بہادر آباد والے بھی ملیں گے لیکن اس کے باوجود کراچی میں پیپلزپارٹی سرپرائز دے گی اور وہاں کی44 میں سے 20 سے زائد سیٹیں جیتے گی اور یہی سرپرائز ہوگا جبکہ سندھ میں الیکشن کے دوران پیپلز پارٹی سو فیصدی کامیابی حاصل کرے گی ۔ان کا کہنا تھا کہ انتخابات میں تاخیر کرانے کی کوشش کی جائے گی لیکن عدلیہ اور الیکشن کمیشن الیکشن کرانے کے لیے پر امید ہیں تاہم اس بار الیکشن ماضی کے مقابلے میں مختلف ہونگے اور اور دنوں سے دن بھی مختلف ہونگے۔انہوں نے کہا کہ پارٹیاں 90اور 88  کی طرح ہر صوبے میں بنیں گی لیکن انہیں اختیارات نہیں ملیں گے، خیبرپختو نخواہ اور بلوچستان میں نئی پارٹی بنا کر وہاں سے وزیر اعظم لانے کی کوشش کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ فنکشنل لیگ کے خلاف کیسز بننے میں ہمارا کوئی ہاتھ نہیں، ان کے خلاف تو ریفرنسز پہلے سے تیار تھے ،جی ڈی اے بنا کر کچھ لوگوں نے سوچا تھا کہ انہیں ہر احتساب سے بچایا جائے گا تو یہ ان کی خوش فہمی ہوگی، احتساب سب کا ہوگا اور کوئی بچ نہیں پائے گا۔

مزید : علاقائی /سندھ /سکھر