”لاک ڈاون نہیں کریں گے ،کورونا سےلڑنے کے لیے ٹائیگر فورس بنا رہے ہیں:وزیراعظم

”لاک ڈاون نہیں کریں گے ،کورونا سےلڑنے کے لیے ٹائیگر فورس بنا رہے ...
”لاک ڈاون نہیں کریں گے ،کورونا سےلڑنے کے لیے ٹائیگر فورس بنا رہے ہیں:وزیراعظم

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اگر چین جیسے حالات ہوتے تو آج شہروں کو بند کردیتا ، کورونا سے لڑنے کے لیے ٹائیگر فورس بنا ئیں گے ،کورونا ریلیف فنڈ میں چند ہ دینے والوں سے کسی قسم کا سوال نہیں کیا جائے گا ،اگر لوگ یہ چندہ اپنے ٹیکس میں ڈکلیئر کریں گے تو ٹیکس میں بھی چھوٹ ملے گی ۔

قوم سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اس وقت ساری دنیا اپنی کپیسٹی کے مطابق جنگ لڑ رہی ہے ان میں سے صرف چین کامیاب ہوا ہے جنہوںنے ووہان میں بسنے والی دو کروڑ آبادی کو لاک ڈاون کردیا اور وائرس پر قابو پالیا ،اگر ہمارے بھی چین جیسے حالات ہوتے تو آج شہروں کو بند کر دیتا ،ہمارا مسئلہ ہے کہ ساٹھ فیصد آبادی شدید غربت میں رہتی ہے ،ایسے گھرانے ہیں جو دو قت کی روٹی نہیں کھا سکتے ،بیس فیصد ایسے لوگ ہیں جو غربت کی لکیر کے ارد گرد ہیں اوردو مہینوں کے لاک ڈاون سے شدید متاثر ہو سکتے ہیں ،پاکستان میں تقریباً آٹھ ،نو کروڑ لوگ متاثر ہو سکتے ہیں ۔وزیراعظم نے کہا کہ اگر ہم لاک ڈاون میں ان غریب لو گوں کا خیال نہیں کر رہے تو لاک ڈاون ناکام ہو گا کیونکہ یہ بیماری امیر غریب میں فرق نہیں کرتی ،اگر بڑے علاقوں میں لاک ڈاون کردیا گیا اور کچی آبادیوں میں لاک ڈاون نہ ہو سکا یا انہوں نے لاک ڈاون کو نہ مانا تو پھر اس وائرس پر قابو نہیں پایا جا سکتا ۔ان کا کہنا تھا کہ امیر ترین ملکوں میں کورونا وائرس نے تباہی مچادی ہے ،بھارت کو لاک ڈاون کرنے کا فیصلہ کیا گیا لیکن آج بھارتی وزیراعظم نے معافی مانگی کہ سوچے سمجھے بغیر لاک ڈاون کیا ،اب بھارت کا مسئلہ یہ ہے کہ اگر لاک ڈاون ہٹاتے ہیں تو کورونا وائرس پھیل سکتا ہے اور اگر رکھتے ہیں تو لوگوں کا بھوک سے مرنے کا خدشہ ہے ،ہمیں یہ جنگ حکمت سے لڑنی ہے ،پہلے ملک کے حالات دیکھنے ہیں کہ لاک ڈاون سے پہلے کیا ہم گھروں میں کھانا پہنچا سکتے ہیں ۔

ہمارے پاس امیر ملکوں کے مقابلے میں وسائل نہیں ہیں لیکن دو بڑی چیزیں ہیں ،ایک ایمان ہے جس کی وجہ سے ہم سب سے زیادہ خیرات دینے والے ممالک میں شامل ہوتے ہیں اور دوسرا ہمارے نوجوان ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم کورونا سے لڑنے کے لیے ٹائیگر فورس بنا رہے ہیں جس میں ینگ ڈاکٹرز ،انجینئر ز ،ڈرائیور اور ہر طبقے سے تعلق رکھنے والے نوجوان حصہ لے سکتے ہیں ۔یہ ٹائیگر فورس ان علاقوں میں جائے گی جہاں لاک ڈاون کیا جائے گا اور کھانا پہنچا یا جائے گا ۔

عمران خان نے کہا کہ کورونا ریلیف فنڈ میں چند ہ دینے والوں سے کسی قسم کا سوال نہیں کیا جائے گا ،اگر لوگ یہ چندہ اپنے ٹیکس میں ڈکلیئر کریں گے تو ٹیکس میں بھی چھوٹ ملے گی ،سٹیٹ بینک نے فیصلہ کیا ہے کہ جو کاروباری حضرا ت مزدوروں کو بے روز گار نہیں کریں گے ،انہیں سٹیٹ بینک سستے قرضے دے گا ۔

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -قومی -