جنگل میں جرئم کو کنٹرول کرنے کیلئے قانون بدلنا ہوگا چوہدری حیات حسن

جنگل میں جرئم کو کنٹرول کرنے کیلئے قانون بدلنا ہوگا چوہدری حیات حسن

                         چھانگا مانگا(رانا محمد یوسف)چھانگامانگا فارسٹری کے حوالے سے ایک بہترین مثال سمجھا جاتا ہے جنگل کیلئے ایک بڑا سٹاف موجود ہے جواس قیمتی سرمایہ کی نگرانی پر مامور ہے خوش قسمتی سے جنگل کو ایک دیانتدار فرض شناش اور باصلاحیت نوجوان ڈی ایف او چوہدری محمد حیات حسن کی خدمات حاصل ہیںجنہوں نے قومی خزانے کو ذاتی جاگیر سمجھنے والوں کو حکمت عملی سے روکا ہے جنگل کو اپنے لیے ترنوالہ تصور کرتے تھے اور ذاتی جاگیر سمجھنے والوں کو اپنی صلاحیتوں سے لگام دی ڈویژنل فارسٹ آفیسر چوہدری محمد حیات حسن نے محکمانہ امور پر گفتگو ہوئی جس میں انہوں نے پاکستان کو بتایا جنگل میں بڑھتی ہوئی واردتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے قانون بدلنا ہوگا ورنہ ٹمبر مافیا پاکستان کے تمام جنگلات کو ہڑپ کر جائے گا محکمہ جنگلات لکڑی چوروں کو پرچہ درج کراتا ہے آٹھ ،دس سال تک عدالتوں میں کیس چلتا ہے جس سے صرف لکڑی چوروں کو 500روپے جرمانہ ہو جاتا ہے محکمہ جنگلات قانون بنائے کے فارسٹر موقعہ پر جرمانہ وصول کرے اور جس گاڑی ٹرک،وین،ٹریکٹراورسائیکل پر لکڑی چوری ہوئی پکڑی جائے اُسے قبضہ میں کر کے نیلام کرنے کی اجازت دے چوری خودبخود رک جائے گی چوہدری حیات حسن نے بتایا کہ اپنی مختصر سی تعیناتی کے دوران 150ایکڑ رقبہ پر پودے لگائے ہیں مزید اس سال 2014ءکے اندر 5ہزار ایکڑ رقبہ پر پودے کاشت کئے جا رہے ہیں 3سے 4سال تک تعینات رکھا گیا تو جنگل چھانگامانگا کے 10512ایکڑ مکمل رقبہ پر درخت لگا ئے جائیں گے موجودہ حکومت مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما ایم این اے حمزہ شہباز کے ساتھ لکڑی چوری کو روکنے کے سلسلہ میں بات ہوئی ہے جن کا کہنا تھا کہ بہت جلد جنگل چھانگامانگا کے چاروں جانب پختہ کنکریٹ بونڈری تعمیر کروائی جائے گی جنگل میں داخل ہونے کے لیے مخصوص راستوں پر چوکیاں تعمیر ہونگی۔جہاں پر فارسٹ گارڈ ،بلاک آفیسراورچوکیدار تعینات کئے جائیں گے تاکہ ٹمبر مافیا کو نکیل ڈالی جا سکے ۔حیات حسن ڈی ایف او کا کہنا تھا کنکریٹ بونڈری کی تعمیر سے جنگل سے لکڑی چوری کا خاتمہ ہوگااور کروڑوں روپے سالانہ کی بچت ہوگی جبکہ نیشنل پارک چھانگامانگا کی خوبصورتی میں اضافہ کرنے کے لیے لاکھوں روپے خرچ کئے جا رہے ہیںجس میں حمزہ شہباز خصوصی دلچسپی لے رہے ہیںبڑھے شہروں میں دہشت گردی کے باعث سیاحوں نے مہتابی جھیل چھانگامانگا کا رخ کر لیا ہے جنہیںہم ہر طرح کی سہولت دے رہے ہیں تاکہ جنگل کا ریونیوبڑھایا جا سکے ۔جنگل چھانگامانگا کی پہلے والی افا دیت بحال کرنے میں کامیاب ہو جائیںگے لکڑی چوروں کو نکیل ڈالنے کے لیے سخت اقدامات کئے جارہے ہیںمہتمم جنگلات چھانگامانگانے کہا لکڑی چوروںکو پکڑنے کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دے رکھی ہے جس کی نگرانی چوہدری عمران ستار ایس ڈی ایف او اور خود کرتا ہوں اگر محکمہ جنگلات نے مجھے یہاں پر عرصہ تین سال کیلئے رکھا تو جنگل چھانگامانگا 10512ایکڑ رقبہ کا کوئی ایکڑ درختوں سے خالی نہیں ہوگا اور جنگل پچھلے بیس سال والا نظر آئے گا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4