کھانا ضائع ہونے سے کیسے بچائیں؟

کھانا ضائع ہونے سے کیسے بچائیں؟
کھانا ضائع ہونے سے کیسے بچائیں؟

  

 لندن (نیوز ڈیسک) بازار میں دستیاب مختلف غذاﺅں پر ان کے قابل استعمال ہونے کی تاریخ لکھی ہوتی ہے اور عام طور پر یہی سمجھا جاتا ہے کہ اس تاریخ کے بعد ان غذاﺅں کو استعمال نہیں کرنا چاہیے، لہٰذا روزانہ ہزاروں ٹن خوراک کو اس کے استعمال کی تاریخ گزرجانے کی وجہ سے ضائع کردیا جاتا ہے۔ لیکن ماہرین غذائیات کا کہنا ہے کہ ہم جو خوراک ضائع کرتے ہیں اس میں سے بہت سی ابھی قابل استعمال ہوتی ہے اور مقررہ تاریخ کا یہ مطلب نہیں کہ عین اسی دن وہ غذا استعمال کے قابل نہیں رہی، آپ مختلف غذاﺅں کے رنگ، خوشبو اور حالت کو دیکھ کر بآسانی فیصلہ کرسکتے ہیں کہ وہ ابھی قابل استعمال ہیں یا نہیں۔ مثلاً ٹماٹر کو ہی لیجئے، اگر ٹماٹر میں پانی جمع ہوجائے، ٹماٹر حد سے زیادہ نرم ہوجائے یا اس میں سے بو آرہی ہو تو اسے ضرور ضائع کردیجئے، اگر محض اس کے گودے کا رنگ زرا گہرا ہوچکا ہے تو یہ قابل استعمال ہیں۔ مچھلی پکڑے جانے کے بعد پانچ ڈگری سے کم درجہ حرات پر محفوظ رکھی جائے تو ایک ماہ تک قابل استعمال رہتی ہے۔ لیکن عموماً بازار میں دستیاب مچھلی کے بارے میں آپ کو معلوم نہیں ہوتا کہ یہ کب پکڑی گئی تھی لہٰذا اگر اس کا گوشت بہت نرم ہوچکا ہے یا داغدار ہوچکا ہے تو اسے استعمال نہ کریں، اگر اس کا رنگ سبزی مائل ہوچکا ہے تو ہرگز ہرگز استعمال نہ کریں۔ آئس کریم کو فریزر میں لمبے عرصے تک رکھنے کا فائدہ نہیں کیونکہ اس کا ذائقہ بہرحال تبدیل ہوجائے گا۔ اگر اس کا رنگ میلا ہوجائے یا اس میں دہی یا پنیر جیسا ذائقہ محسوس ہو تو اسے ضائع کردیجئے۔ کٹا ہوا گوشت یا قیمہ بہت جلد خراب ہوسکتا ہے اگر اس کا رنگ گہرا ہوچکا ہے یا لیس محسوس ہو تو اسے استعمال نہ کریں۔ انڈوں کو خریدنے کے تین ہفتے کے دوران استعمال کرلیں، انڈے کو پانی میں ڈال کر دیکھیں اگر یہ ڈوب جائے تو قابل استعمال ہے۔ مصالحہ جات کو اگر پیسچرائز (جراثیم کشی) کیا گیا ہے تو چھ ماہ تک قابل استعمال ہوسکتے ہیں۔ مرغی کا گوشت مچھلی کی نسبت جلدی خراب ہوجاتا ہے لہٰذا اس کے استعمال کی معیار کے ایک دن بعد تک استعمال ہوسکتا ہے اس کے بعد ضائع کردیں۔ 

مزید : ڈیلی بائیٹس