ہمیں مرچیں کیوں پسند ہیں، سائنس نے بتا دیا

ہمیں مرچیں کیوں پسند ہیں، سائنس نے بتا دیا
ہمیں مرچیں کیوں پسند ہیں، سائنس نے بتا دیا

  

 شکاگو (نیوز ڈیسک) مختلف لوگوں میں ذائقوں کو محسوس کرنے کی صلاحیت مختلف ہوتی ہے اور عام طور پر یہ سمجھا جاتا ہے کہ جس کی زبان پر ابھار ہوتے ہیں وہ ذائقوں کو محسوس کرنے میں زیادہ زود حِس ہوتے ہیں۔ اسی صلاحیت کے فرق کی وجہ سے کچھ لوگوں کو میٹھا زیادہ مزے کا لگتا ہے اور کچھ نمکین غذاﺅں کو پسند کرتے ہیں۔ ایک امریکی سائنسدان نکول گارنونے مختلف ذائقوں کو محسوس کرنے کی صلاحیت اور فرق کی گتھی سلجھا دی ہے۔ ان کی تحقیق سے یہ ثات ہوا ہے کہ اپنے کسی ذائقے کو کتنی اچھی طرح محسوس کرسکتے ہیں اور کس قسم کے ذائقوں کو آپ کم یا زیادہ محسوس کرسکتے ہیں اس کا فیصلہ آپ کے جینز کرتے ہیں۔ ذائقے کے متعلق ان تمام صلاحیتوں کا تعلق اس بات سے بالکل نہیں ہے کہ آپ کی زبان پر ابھار ہیں یا یہ بالکل ہموار سطح رکھتی ہے۔ سائنسی جریدنے ”فرنٹیئرز ان انٹی گریٹو نیوروسائنس“ نے اس تحقیق کے حوالے سے بتایا ہے کہ بعض لوگ زیادہ بہتر ذائقے جیسا کہ کڑواہٹ کو دوسروں سے زیادہ محسوس کرتے ہیں اور مرچ مصالحے والی چیز کھا کر گھنٹوں سُوں سُوں کرتے رہتے ہیں جبکہ بعض لوگ ثابت ہری مرچ کھا کر بھی کسی مسئلے کا شکار نہیں ہوتے جس کی وجہ ان کے جینز کا فرق ہے کیونکہ لوگوں کے جینز یہ فیصلہ کرتے ہیں کہ وہ مختلف ذائقوں کو کتنا محسوس کریں گے اور انہیں کیسے ذائقے پسند آئیں گے۔ 

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی