مغلپورہ میں جرائم کی بڑھتی وارداتوں پر شہری پولیس کیخلاف سراپا احتجاج بن گئے

مغلپورہ میں جرائم کی بڑھتی وارداتوں پر شہری پولیس کیخلاف سراپا احتجاج بن گئے ...

 لاہور(لیاقت کھرل) سول لائن ڈویژن کامغل پورہ پولیس سرکل جس کے تحت تھانہ گجر پورہ ، تھانہ مغل پورہ اور تھانہ شالیمار آتے ہیں۔ اس سرکل کی حدود میں ڈکیتی اور راہزنی کی وارداتوں نے جہاں شہر کے دیگرپولیس سرکلوں کو مات دے دی ہے وہاں اس سرکل کی حدود میں موٹر سائیکل چوروں ، نقب زنوں اور قبضہ گروپ کے ارکان نے بھی اندھیر نگری مچا رکھا ہے ۔ جس سے اس سرکل کا کرائم کنٹرول سے باہر ہو کر رہ گیا ہے ۔ جس سے اس سرکل کے ماتحت تھانوں کی حدود کے مکینوںمیں جہاں عدم تحفظ پایا جانے لگا ہے ۔ وہاں کرائم کی شرح بڑھنے پر شہری سراپا احتجاج بھی پائے گئے ۔”پاکستان“ کے سروے میں اس سرکل کے ماتحت تھانوںمیں آنے والے سائلین کی زیادہ تر شکایات آپریشن پولیس کے خلاف تھیں۔ جس میں سائلین مقدمات درج ہونے پر تھانوں میں دربدر ٹھوکریں کھارہے تھے۔ جبکہ دوسر نمبر پر سائلین نے انوسٹی گیشن ونگ کے تفتیشی افسران خلاف بھی شکایات کے انبار لگائے ”پاکستان“ کی ٹیم نے سرکل کے ماتحت تھانوں گجر پورہ، مغل پورہ اور تھانہ شالیمار آنے والے سائلین کی شکایات کا جائزہ لینے کے بعد سرکل آفس ”ڈی اس پی مغل پورہ“ کے دفتر کا سروے کرنے پر بھی سائلین کی ایک بڑی تعداد پولیس سے انصاف نہ ملنے پر سراپا احتجاج بنے ہوئے پائے گئے۔ ”پاکستان“ کی ٹیم کو تھانہ مغل پورہ میں آنے والے سائلین نے بتایا شالیمار لنک روڈ پر دن دیہاڑے ڈاکوﺅں نے لوٹ مار مچا رکھی ہے ۔ جبکہ شہریوں کا کہنا تھا کہ اس تھانے کی حدود میں موٹر سائیکل چوروں نے اندھیر نگر مچا رکھی ہے ۔ تھانہ گجر پورہ میں آنے والے سائلین کی زیادہ تعداد کی شکایات مقدمات درج نہ ہونے کی تھیں۔ سائلین اختر رضیہ بی بی ، شفقت بی بی ، کرن اکرم علی اور گل نواز نے بتایا کہ پولیس ان کی درخواستوں پر مقدمات درج نہیں کررہی ہے ۔ شہری اختر علی ، اصغر علی ،زاہد حسین کھوکھر، بشیر احمداور محمد مقبول ناصر نے بتایا کہ تھانہ گجر پورہ سے چند گذ کے فاصلے پر اڑھائی ماہ فیل ڈاکوﺅں نے دکانداروں کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ پولیس تاحال ملزمان کے گھاٹ اتار دیا۔ پولیس تاحال ملزمان کا سراغ نہیں لگا سکی ہے ۔ کوٹ خواجہ سعید کے مکینوں ابرار احمد حاجی افضل محمود، اکبر گجر، اختر رضا، اور سلیم احمد نے بتایا کہ چائنہ سکیم، کوٹ خواجہ سعید اور ٹانگے والا اڈہ میں ٹریفک پولیس کی ڈیوٹی نہ ہونے کی وجہ سے حادثات نے زور پکڑ رکھا ہے۔ چند روز قبل تیز رفتار ٹرک نے نو عمر بہن بھائیوں کو کچل کر ہلاک کردیا۔ پولیس ٹس سے مس نہ ہوئی۔ شہری اصغر علی اور اکبر علی نے بتایا گجر پورہ کے علاقہ ڈاکوﺅں نے اندھیر نگر مچارکھی ہے جبکہ اس تھانے کی حدود میں قبضہ گروپ کے ارکان کی اجارہ داری سے قتل و غارت نے جنم لے رکھا ہے ۔ جس سے مکینوں کی نیندیں حرام ہو کر رہ گئی ہیں۔ خاتون رضیہ بی بی نے بتایا اس کی بیٹی کو اغوا کرلیا گیا۔ پولیس نے چار روز بعد مقدمہ درج کیا اور ایک ماہ گزر جانے کے باوجود تفتیشی افسر بات تک نہیں سن رہا ہے۔ شالیمار تھانے آنے والے سائلین زاہدہ بی بی، حاجی غلام حسین، کنیزاں بی بی اور امجد علی شاہ سمیت صغراں بی بی نے انوسٹی گیشن ونگ کے تفتیشی افسران کے خلاف شکایات کیں، جبکہ حاجی غلام حسین نے بتایا کہ مدینہ کالونی میں واردات یا کسی قسم کا واقعہ ہونے پر شالیما ر پولیس تھانہ باغبانپورہ علاقہ کا کہہ کر ٹال دیتی ہے اور کئی کئی روز تک پولیس حدود کا تعین نہیں کر سکتی ہے، اس موقع پر ڈی ایس پی ک دفتر میں آنے والے سائلین نے بھی شکایات کے انبار لگا دیئے۔ جبکہ اس حوالے سے ڈی ایس پی سرکل خالد متین نے بتایا کہ انہوں نے سرکل کے ماتحت تھانوں میں فری رجسٹریشن کا حکم دے رکھا ہے۔ جس سے مقدمات کی رجسٹریشن بڑھی ہے۔ تاہم اس میں مقدمات کی تفتیش میں مکمل طور پر انصاف فراہم کرنے کا حکم دے رکھا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تعیناتی کے دوران ڈکیتیاں اور راہزنی کی وارداتوں میں ملوث متعدد گینگز پکڑ کر لاکھوں روپے کی ریکوری کی ہے۔ جبکہ ہر ماہ ٹاپ ٹین سمیت درجنوں اشتہاری بھی پکڑنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ ان کے سرکل میں دیگر سرکلوں سے کرائم کم ہے۔

مزید : علاقائی