معروف گلوکار‘ اداکار‘ فلم ساز عنایت حسین بھٹی کی17ویں برسی کل منائی جائیگی

معروف گلوکار‘ اداکار‘ فلم ساز عنایت حسین بھٹی کی17ویں برسی کل منائی جائیگی

میکلوڈگنج (غلام حسین شاہد)کل 31مئی کو ملک کے معروف گلوکار ، اداکار، ہدایت کار، فلم ساز ، کالم نگار،دانشور اور معروف مذہبی سکالر عنایت حسین بھٹی کی 17ویں برسی منائی جائے گی ۔ اس موقع پر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کے لیے مختلف جگہوں پر قرآن خوانی کی محافل بھی منعقد ہوں گی ۔ مرحوم عنایت حسین بھٹی کا انتقال مورخہ 31مئی 1999کو گجرات میں ہواتھا۔ عنایت حسین بھٹی نے ایک لمبے عرصے تک فن کی دنیاپر راج کیا ۔ اور فلم انڈسٹری کو متعدد لازوال اور کامیاب فلمیں دیں ۔ گوکہ مرحوم نے اپنی زندگی کا ایک بڑا عرصہ فلمی دنیا میں گزار مگر اس کے باوجود مرحوم صوم و صلوۃ کے انتہائی پابند تھے ۔ وہ فلاحی کاموں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے تھے ۔انہوں نے چندہ مہم چلائے بغیر گلا ب دیوی ہسپتال لاہورمیں اپنی والدہ محترمہ بختاور بی بی کے نام پر ایک بڑا اور شاندار وارڈ بھی تعمیر کروایا۔ وہ عربی اور پنجابی میں فاضل تھے ۔ وہ گجرات سے حصول تعلیم کے لیے وکیل بننے کے لیے لاہورآئے تھے مگر وہ وکیل بننے کی بجائے اچانک فلمی لائن میں آگئے۔ مرحوم ایک اعلیٰ تعلیم یافتہ انسان تھے ۔ مرحوم جب اپنے اخبار روزنامہ پاکستان میں سابقہ انتظامیہ کے دور میں پبلک آفیسر تعینات تھے ۔ اور چیلنج کے نام سے کالم بھی لکھا کرتے تھے ۔ تو راقم نے بھی صحافتی لحاظ سے اُ ن سے بہت کچھ سیکھا اور انہوں نے بھی بھر پور رہنمائی فرمائی ۔ مرحوم نے اپنی زندگی میں ہمیشہ راقم کو بیٹے کا پیار دیا۔ مرحوم عنایت حسین بھٹی نے گلوکاری کے میدان میں ملکہ ترنم نورجہاں کے ساتھ بھی بہت کام کیا۔ اور اپنے دور کی معروف اور کامیاب ہیروئنز رانی ، فردوس ،نغمہ ،سلونی اور روزینہ وغیرہ کے ساتھ بھی بہت کام کیا۔ مرحوم نے صوفیانہ کلام گاکر بھی بہت شہرت حاصل کی ۔ موجودہ وزیراعظم میاں محمد نواز شریف بھی اُن کی بڑی قدر کرتے تھے۔ سابق وزیراعظم پاکستان ذوالفقار علی بھٹو اور سابق نگران وزیراعظم ملک معراج خالد تو اُن کے بہترین دوستوں میں سے تھے۔ سابق وزیراعظم پاکستان چوہدری شجاعت حسین تو اُن کے ہم شہر تھے اور اُن کی دل وجان سے قدر دان بھی تھے۔ مرحوم نے پاک بھارت جنگوں میں لازوال جنگی ترانے گائے ۔جنہیں بے پناہ مقبولیت حاصل ہوئی ۔ اُن کا ایک گایا ہوا جنگی ترانہ اے مرد مجاہد جاگ ذرا ، اب وقت شہادت ہے آیا ،اللہ اکبر اللہ اکبرآج بھی پاک فوج کے فوجی بینڈ میں شامل ہے ۔مرحوم کے دو بیٹے وسیم عباس اور ندیم عباس بھی کچھ عرصہ فلم انڈسٹر ی میں رہے ۔اوربعد ازاں فلم انڈسٹری سے کنارہ کش ہوگئے۔ مرحوم نے اپنی زندگی کے آخری ایام اپنی بڑی بیٹی ریحانہ وقار جوڑا (گجرات) کے ہاں گزارے جہاں 31مئی 1999کو اُن کا انتقال ہوگیا۔ خدائے رحمان اُن کو جنت الفردوس میں جگہ عطاء فرمائے ۔

مزید : کلچر