برطانوی وزیر خارجہ کشمیر پر بیان دینے سے قبل تاریخ کا مطالعہ کریں: یاسین ملک

برطانوی وزیر خارجہ کشمیر پر بیان دینے سے قبل تاریخ کا مطالعہ کریں: یاسین ملک

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سری نگر( اے این این )لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ کشمیری عوام کیلئے فوج کی براہ راست دھمکی اس بات کا بین ثبوت ہے کہ جموں کشمیر کو آرمی اور پولیس کی خواہشات اور احکامات کے تحت ہی چلایا جارہا ہے ، برطانوی وزیر خارجہ کشمیر پر کوئی بیان دینے سے قبل تاریخ کا بغور مطالعہ کریں جبکہ یہ برطانیہ ہی تھا جس نے جنوبی ایشاکے امن و استحکام کو ہمیشہ کیلئے خطرے میں ڈالتے ہوئے مسئلہ جموں کشمیر کو حل کئے بناچھوڑ دیا۔ ملک نے کہا کہ فوج اور فورسز کی جانب سے لوگوں کے مذہبی اور نجی معاملات میں مداخلت کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کی جاسکتی ۔انہوں نے کہا کہ حال ہی میں بھارتی آرمی نے بلاجواز طور پر بندوقوں کے دہانے کھول کر درجنوں معصوم لوگوں کو زخمی کردیا جب لوگ مقامی جامع مسجد میں جمع ہوکر نئی انتظامیہ کمیٹی کے انتخاب میں شامل ہورہے تھے۔ اس سے قبل اس علاقے میں اسی حوالے سے لوگوں کے دو گروپس کے درمیان کچھ اختلافات تھے جنہیں باہمی طور پر حل کیا گیا تھااور لوگ ایک متفقہ کمیٹی بنانے کیلئے جمع ہورہے تھے۔ لیکن غالبا یہ عوامی اتفاقی کیفیت آرمی کو پسند نہیں آئی اور انہوں نے تلاشیوں اور نامعلوم مطلوب اشخاص کی گرفتاری کی آڑ میں علاقے پر دھاوا بول کر بلاجواز فائرنگ کی اور عام لوگوں کو زخمی کردیا۔ ملک نے کہا کہ جموں کشمیر کے لوگ عرصہ دراز سے آرمی اور فورسز کے جبر اور ظلم کو سہتے آرہے ہیں۔ آرمی اور فورسز نے ہمارے لاکھوں لوگوں کو تہہ تیغ کیا ، ہمارے ہزاروں لوگ حراستی گمشدگی کا شکار بنائے گئے ،ہزاروں بے نامی قبریں بھی بھارتی ظلم و جبر کا نشان ہیں اور یہی آرمی ہے جس نے ہماری سیکڑوں ماں بہنوں کی عزت وعصمت پر حملے کئے ہیں اور یہی ہیں جن کی حراست اور ٹارچر کا ہزاروں لاکھوں کشمیریوں نے سامنا کیا ہے ۔ملک نے کہا کہ کشمیر ایک بنیادی مسئلہ اور جنوبی ایشیاکے امن و استحکام کو لاحق سب سے بڑا خطرہ ہے اسلئے جو کوئی بھی اس خطے میں امن و استحکام کا متلاشی ہو اسے اس اہم اور بنیادی مسئلے کو سب سے پہلے ایڈریس کرنا ہی پڑے گا۔انہوں نے کہا کہ کشمیر کو پس پشت ڈال کر بھول جانا کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں ہوسکتا اور اس قسم کا بچگانہ طرز عمل محض مذید تباہی اور انتشار پیدا کردے گا۔

مزید :

عالمی منظر -