اندراج پیدائش و اموات کے قوانین میں ترمیم ‘ سائلین لٹنے پر مجبور

اندراج پیدائش و اموات کے قوانین میں ترمیم ‘ سائلین لٹنے پر مجبور

ملتان (سپیشل رپورٹر) پنجاب حکومت کی جانب سے اندراج پیدائش و اموات کے قوانین میں ترمیم کے نام پر ملتان کے یونین کونسل کے سیکرٹریز نے لوٹ مار شروع کردی ، نئے قوانین کی آڑ میں نارمل اندراج ، لیٹ اندراج اور بعد از معیار اندراج کے علیحدہ علیحدہ ریٹ مقرر کردیئے ہیں ،ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ ملتان ڈویژن اور ڈی او سی اوزریونیو دفاتر تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں اور گذشتہ دو ماہ کے دوران کسی بھی یونین کونسل کے سیکرٹری کے خلاف کاروائی نہیں کی جا سکی ۔ بتایا گیا ہے کہ پنجاب حکومت کی جانب سے اندراج(بقیہ نمبر31صفحہ12پر )

پیدائش و اموات کا طریقہ کار بے حد پیچیدہ کردیا ، نارمل اندراج پیدائش کے 60یوم ، لیٹ اندراج 61یوم تا 7سال ، بعد از معیاد اندراج 7سال سے زائد عمر کے بچوں کیلئے علیحدہ علیحدہ طریقہ کار مقرر کیا گیا، یونین کونسلز کے سیکرٹریز نے لیٹ انداراج اور ابعد از انداراج کروانے کیلئے آنیوالے شہریوں سے منہ مانگے پیسے مانگنے شروع کردیئے۔

یوسی سیکرٹریز

مزید : ملتان صفحہ آخر