پاناما لیکس کو ’’عافیہ لیکس‘‘ کی کہانی شروع کرنے کا وقت آگیا ہے، فوزیہ صدیقی

پاناما لیکس کو ’’عافیہ لیکس‘‘ کی کہانی شروع کرنے کا وقت آگیا ہے، فوزیہ ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سیاسی اور عسکری قیادت ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو انصاف فراہم کرے۔ پوری پاکستانی قوم پاکستانی خاتون اور ماہر تعلیم کو انصاف ملنے کی منتظر ہیں جسکی وہ مستحق ہیں۔ ڈاکٹر عافیہ کی ہمشیرہ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی لاہور پریس کلب کے باہر سول سوسائٹی کے ایک بڑے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کررہیں تھیں۔ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ڈاکٹر عافیہ کے معاملے میں عدل و انصاف کی بنیاد پر فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا کی سول سوسائٹی اور انسانی حقوق کے علمبردارعافیہ صدیقی کی رہائی کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ امریکہ اور پاکستان کی انتظامیہ کو ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کے مطالبہ کا احترام اور اسے تسلیم کرنا چاہئے۔انہوں نے وزیر اعظم پاکستان، چیف جسٹس آف پاکستان اورآرمی چیف سے قوم کی بیٹی کو انصاف فراہم کرنے میں اپنا بھرپور کردار ادا کرنے کی اپیل کی۔ سیاسی قیادت کوعافیہ کو انصاف فراہم کرکے پاکستانی معاشرے کوعدل کی بنیاد پراستوار کرنے کیلئے اپنے ایجنڈے پرفوری عمل شروع کر دینا چاہئے۔ انہوں نے سوال کیا کہ بدعنوانی اور ناانصافی کو ملک سے کیسے ختم کیا جاسکتا ہے جبکہ حکمران قوم کی ایک بیٹی اور ماں کو انصاف فراہم کرنے کے قابل نہیں بن جاتے۔ انہوں نے کہا پاناما لیکس کی کہانی ختم ہونے والی ہے اور اب ’’عافیہ لیکس‘‘ کی کہانی شروع کرنے کا وقت آگیا ہے۔ ڈاکٹر عافیہ کو دن کے اجالے میں کراچی کی ایک سڑک سے اپنے تین کمسن بچوں سمیت اغواکرکے پاکستان سے باہر انسانی اسمگلنگ کا ارتکاب کرتے ہوئے امریکی ڈالروں کے عوض فروخت کیا گیا تھا۔ تاہم اس معصوم عورت اور اس کے معصوم بچوں کے اغواء اور اسمگلنگ میں ملوث تمام افراد اب بھی احتساب سے آزاد ہیں۔ڈاکٹر فوزیہ صدیقی جو کہ معروف نیورو فزیشن بھی ہیں نے کہا کہ ڈاکٹر عافیہ کی غیر قانونی حراست کی وجہ سے ’’یوم تکبیر کے چاند‘‘ کو گرہن لگ گیا ہے۔ انہوں نے مزیدکہاہے کہ عافیہ کی رہائی میں مزید تاخیرعالمی اور پاکستانی سول سوسائٹی کیلئے قابل قبول نہیں ہے۔ہیروشیما، جاپان کے حالیہ دورے کے دوران امریکی صدر اوبامانے امریکی جوہری حملے پرجاپانی قوم سے معافی مانگی ہے۔ڈاکٹر فوزیہ نے کہا کہ کیا امریکی اسٹیبلشمنٹ کو اس بات کا ادراک نہیں ہے کہ ایک دن مستقبل کے امریکی صدرکو پاکستان کے دورے کے موقع پر ڈاکٹر عافیہ کے معاملے پر معذرت کرنے پڑے گی۔ امریکہ مسلم دنیا کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے اور ان ممالک میں امریکی ساکھ کو بہتر بنانے کے لئے اربوں ڈالر خرچ کر رہا ہے۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی سے جسے عالمی سطح پر انسانی اور ماؤں کے حقوق کے حوالے سے ایک آئکن تصورکیا جاتا ہے نہ صرف مسلم ممالک بلکہ پوری دنیا میں راتوں رات امریکی ساکھ میں بہتری آئے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی عدالتوں کاپاکستانی شہری عافیہ کو انصاف حاصل کرنے کے معاملے میں ایک اہم کردار ہے۔ انہوں نے کہا کہ عافیہ کی کنگرو کورٹ طرز کی سزا قانون اور انصاف کی تاریخ پر ایک بدنما داغ ہے اوریہ امریکہ کے مفاد میں ہے اس ظلم کو جتنی جلد ممکن ہو دھو کر اپنی آنے والی نسلوں کو ایک قومی شرم سے بچایا جاسکتا ہے۔ڈاکٹر فوزیہ نے حکومت اور سیاسی جماعتوں سے سوال کیا کہ عافیہ کی امریکی جیل میں غیرانسانی قید بھی کیا ان کی بے حسی ختم نہیں کرتی اور وہ اپنے اختلافات کو نظر انداز کرکے پاکستانی شہری عافیہ کی جلد رہائی اور وطن واپسی کیلئے مشترکہ اور فعال کردار ادا نہیں کرسکتے؟

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر