رمضان بازار : مستحق افراد کو مایوس نہیں ہونا چاہئے

رمضان بازار : مستحق افراد کو مایوس نہیں ہونا چاہئے

  

پنجاب کے وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے انتظامیہ کو ہدایت کی ہے کہ رمضان المبارک کے دوران رمضان بازاروں میں روزمرہ استعمال کی اشیا کی سپلائی میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہونے دی جائے۔ تمام اشیا صارفین کو وافر مقدار میں مقررہ نرخوں پر مہیا کی جائیں۔ انہوں نے رمضان بازاروں کی سیکیورٹی سخت کرنے کی بھی ہدایت کی ہے تاکہ لوگ کسی ڈر اور خوف کے بغیر محفوظ خریداری کر سکیں۔ پنجاب حکومت نے عام لوگوں کو رمضان المبارک کے دوران بارعایت اشیا مہیا کرنے کے لئے جو خصوصی انتظامات کئے ہیں، ان کے تحت تین سو رمضان بازار اور18 ماڈل بازار شروع کئے گئے ان میں رعایتی نرخوں پر لوگوں کو آٹا، گھی، دالیں، چینی، مرغی کا گوشت، کھجوریں اور دیگر اشیا مہیا کرنے کا پروگرام ہے۔ وزیراعلیٰ شہباز شریف نے صوبے بھر میں رمضان پیکیج کے تحت 9 ارب روپے کی منظوری دی ہے ۔ امید کی جانی چاہئے کہ عام لوگوں کو حکومتی انتظامات اور کوششوں سے کم از کم رمضان المبارک کے دوران با رعایت اشیا دستیاب ہوں گی۔عام طور پر مشاہدے میں یہ بات آئی ہے کہ ہر سال رمضان المبارک شروع ہوتے ہی روزمرہ استعمال کی اشیاء مہنگی کر دی جاتی ہیں، جبکہ ذخیرہ اندوزی بھی کر لی جاتی ہے۔ اس رجحان کے خلاف پنجاب حکومت کی طرف سے سبسڈی کے تحت رعایتی نرخوں پر اشیائے ضروریہ مہیا کرنے کا پروگرام بنایا جاتا ہے بعض اشیا جن کی مانگ بہت زیادہ ہوتی ہے اور ان کی خریداری سے عام لوگوں خصوصاً مستحق افراد کو بچت ہوتی ہے، ان اشیا کی سپلائی مختلف وجوہ سے مکمل طور پر نہیں ہوتی۔ ان میں آٹا، گھی اور چینی سرفہرست ہے۔ وزیراعلیٰ شہباز شریف نے اعلان کیا ہے کہ رمضان پیکیج کی نگرانی وہ خود کر رہے ہیں۔ یہ بہت اچھا فیصلہ ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ انتظامیہ میں بعض افسران اور اہلکار اپنے مخصوص مفادات کے لئے عام لوگوں کو مکمل طور پر بارعایت اشیاء مہیا کرنے میں رکاوٹ بن جاتے ہیں۔ ایسے عناصر کو ناکام بناتے ہوئے طے شدہ پروگرام پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔ مستحق افراد کو مایوس نہیں ہونا چاہئے اور تمام اشیاء آسانی سے اور وافر مقدار میں سپلائی کی جائیں۔

مزید :

اداریہ -