بزنس کمیونٹی کے تمام ریفنڈز ادائیگیوں سے برآمدات میں اضافہ ہوگا : پیاف

بزنس کمیونٹی کے تمام ریفنڈز ادائیگیوں سے برآمدات میں اضافہ ہوگا : پیاف

  

لاہور(کامرس ڈیسک) پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) نے وزیر خزانہ کی جانب سے 2017-18 کے بجٹ میں تاجروں ، ایکسپورٹرز اور صنعت کاروں کے لئے14 اگست2017 تک تمام سیلز ٹیکس ریفنڈ جاری کرنے کے حکومتی فیصلے کو سراہا ہے اور معیشت کے لئے ایک درست قدم قرار دیا ہے ۔ وزیر اعظم کا ریفنڈز کے ایشوز پر ذاتی دلچسپی لینا او ر اگست تک ریفنڈز کی ادائیگی کا ٖفیصلہ کرنا خوش آئند ہے۔ضرورت اس امر کی ہے کہ اس فیصلے پرحقیقی معنوں پر عمل درآمد یقینی بنایا جائے ۔

انڈسٹری ریفنڈز کی عدم ادائیگی کے باعث تاریخ کے بد ترین بحران کا شکار ہے۔ چئیرمین عرفان اقبال شیخ نے گزشستہ روز سیئنر وائس چیئرمین تنویر احمد صوفی اور وائس چیئرمین خواجہ شاہ زیب کے ہمراہ ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ سیلز ٹیکس ریفنڈز کی جلد ادائیگیوں سے برآمدی صنعتوں کو اضافی سرمایہ ملے گا جس سے مالی مسائل کافی حد تک کم ہو جائیں گے۔عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ بزنس کمیونٹی کے 200 سے 250 ارب روپے کے ریفنڈز رکے ہوئے ہیں۔ کیش فلو کے رک جانے سے گزشستہ سال کے مقابلے میں ملکی برآمدات میں 13.42 فیصد کمی آئی ہے جبکہ مد مقابل بنگلہ دیش کی برآمدات میں 11.82 فیصد اضافہ ہو اہے۔ چیئرمین عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ ایف بی آر کو تمام ریفنڈز کلیمز تیار کر کے جاری کر دینا چاہئے۔ بزنس کمیونٹی کے آئندہ کے کے لائحہ عمل شدیدمتا ثر ہورہے ہیں، جس وجہ سے متعد دیونٹس بند ہو چکے ہیں اور بیروزگاری میں اضافہ ہو رہا ہے۔ سیئنر وائس چئیرمین تنویر احمد صوفی اورخواجہ شاہ زیب اکرم نے کہا کہ اگست تک ایکسپورٹرز کے تمام ریفنڈز بلا امتیاز اور غیر جانب دارانہ فوری ادائیگی کا حکومتی فیصلے پرہر حال میں عملدرآمد کروایا جائے اور بزنس کمیونٹی کے دیگر مسائل کو بھی ترجیحی بنیادوں پر حل کیئے جائیں تاکہ کاوبای برادری ملکی ترقی میں اپنا کردا بہتر انداز میں ادا کر سکے۔

مزید :

کامرس -