نا قص انتظامات، پی ٹی وی رمضان ٹرانسمیشن کی کامیابی کے دعووں کی قلعی کھل گئی

نا قص انتظامات، پی ٹی وی رمضان ٹرانسمیشن کی کامیابی کے دعووں کی قلعی کھل گئی

  

لاہور(فلم رپورٹر)ناقص انتظامات، خراب ساؤنڈ سسٹم اوربد ترین ٹرانسپوٹیشن رمضان المبارک کے دوران پاکستان ٹیلی وژن کراچی مرکز سے پیش کی جانے والی ٹرانسمیشن ’’رمضان پاکستان‘‘ کی کامیابی کے دعووں کی قلعی کھل گئی سحری ٹرانسمیشن دوسرے روز بھی آڈیئنس کے بغیر ہوئی اس کے علاوہ افطار ٹرانسمیشن کے دوران ساؤنڈ سسٹم کی خرابی کے باعث آڈیئنس کی آواز ناظرین کوسنائی نہیں دے رہی تھی۔40لاکھ روپے میں لاہور سے خاص طور پرمنگوائے گئے ا س ساؤنڈ سسٹم کے بارے میں ایگزیکٹو پروڈیوسر امین میمن اور شجاعت اللہ نے یہ دعویٰ کیا گیا تھا کہ پورے ملک میں اس سے زیادہ اعلیٰ کوالٹی کا ساؤنڈ سسٹم دستیاب نہیں ہے۔اگر سب سے اعلیٰ ساؤنڈ سسٹم کا معیار یہ ہے تو غیر معیاری ساؤنڈ سسٹم پر تو بلکل ہی بیڑہ غرق ہوجاتا۔ذرائع کے مطابق پی ٹی وی کراچی مرکز کے کارکنان نے امین میمن اور شجاعت اللہ کو مشورہ دیا ہے کہ بہتر یہ ہے کہ سحری کی طرح افطاری میں بھی عوام کو مدعو نہ کیا جائے کیونکہ جب ان کی بات ہی سنائی نہیں دے گی تو ان کی شرکت کا کیا فائدہ ہے ۔اس کے علاوہ یوم تکبیر کے موقع پر سحری ٹرانسمیشن کے میزبان جنید اقبال کی گفتگو کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے ۔جنید اقبال نے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھاکہ میں عوام کو اس دن کی مبارکباد پیش کرتا ہوں اور اسی دن کی وجہ سے ہم لوگ امن وامان کے ساتھ زندگی گذار رہے ہیں اورانہوں نے ایک بار بھی اس حکومت اور شخصیات کا ذ کر نہیں کیا کہ جن کی وجہ سے پاکستان ایٹمی دھماکہ کرنے میں کامیاب ہوا تھااورجنہوں نے یہ تاریخ رقم کی تھی

جنید اقبال کو اپنی سیاسی وابستگی کے قطع نظرناظرین کو بتانا چاہیے تھا کہ یہ کارنامہ وزیر اعظم نواز شریف،ڈاکٹر عبد القدیر خان اورا ن کے رفقاء نے انجام دیا تھا۔ان کو ذاتی پسند یا نا پسند کی بنیاد پر تاریخ مسخ کرنے کا کوئی حق نہیں تھا۔جنید اقبال کی باتوں پر جب موقع پر موجودلوگوں نے تنقید کی تو جی ایم پی ٹی وی کراچی مرکز امین میمن بولے کہ ہمیں ان باتوں سے کوئی غرض نہیں مجھے تو وفاقی وزیر مریم اورنگزیب کا شاندار ٹرانسمیشن پر مبارکباد کا ایس ایم ایس آیا ہے۔ وفاقی وزیر مریم اورنگزیب کی مبارکباد کے بعد کسی بات کی پرواہ نہیں۔میرے لئے اتنا ہی کافی ہے۔کسی کو ’’رمضان پاکستان‘‘کی نشریات پسند آتی ہیں یا نہیں مجھے اس بات سے کوئی سروکار نہیں ہے۔پی ٹی وی کے کارکنان کی تنقید پر جنید اقبال بے حد پریشان ہیں۔

مزید :

کلچر -