اجتماعی بھوک ہڑتال کا باوقار اختتام اتحاد کا ثمر ہے،حماس

اجتماعی بھوک ہڑتال کا باوقار اختتام اتحاد کا ثمر ہے،حماس

  

غزہ (اے این این)اسلامی تحریک مزاحمت حماس نے41 روز تک مسلسل بھوک ہڑتال کرنے والے فلسطینی اسیران اور پوری قوم کو ہڑتال کے باعزت اختتام پر مبارک باد پیش کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسیران نے اپنی اجتماعی بھوک ہڑتال کے ذریعے دشمن سے اپنے مطالبات منوالیے ہیں۔ ایسا صرف اسیران کی صفوں اتحاد اور یکجہتی کی بنا پر ممکن ہوا ہے۔ فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق حماس کے ترجمان فوزی برہوم نے ایک بیان میں کہا کہ ہمارے بہادر اور دلیراسیران نے غیرمعمولی استقامت اور استقلال کا مظاہرہ کرکے اسرائیلی انتظامیہ کو اپنے مطالبات منوانے پرمجبور کیا۔ یہ سب فلسطینی اسیران کی اجتماعیت اور ان کے اتحاد کا ثمر ہے۔ اگر فلسطینی اسیران اپنی صفوں میں اتحاد کا مظاہرہ نہ کرتے تو دشمن ان کے جائز اور منصفانہ حقوق کی فراہمی کو یقینی بنانے پرمجبور نہ ہوتا۔حماس نے فلسطینی اسیران کی اجتماعی بھوک ہڑتال کی باعزت کامیابی کو حق کی فتح اور باطل اور ظلم کی شکست قرار دیا۔ ترجمان نے کہا کہ اگر فلسطینی قوم اسی طرح کی یکجہتی کا مظاہرہ کرے تو وہ ہرمیدان میں دشمن کے خلاف فتح و نصرت کے جھنڈے گاڑ سکتی ہے۔خیال رہے کہ اسرائیلی جیلوں میں ڈیڑھ ہزار سے زاید فلسطینی اسیران نے گذشتہ اکتالیس دن سے مسلسل بھوک ہڑتال کی تھی۔ کل ہفتے کو اسرائیلی انتظامیہ نے اسیران کے نمائندوں سے مذاکرات کیے۔ طویل مذاکرات کے بعد اسیران نے بھوک ہڑتال مطالبات پورے ہونے کی یقین دہانی کے بعد معطل کردی تھی۔

مزید :

عالمی منظر -