افغانستان میں جاری خانہ جنگی 29صوبوں تک پھیل چکی ہے او سی ایچ اے رپورٹ

افغانستان میں جاری خانہ جنگی 29صوبوں تک پھیل چکی ہے او سی ایچ اے رپورٹ

  

اسلام آباد (ڈی این ڈی)کئی دہائیوں سے افغانستان کو اپنی لپیٹ میں لئے خانہ جنگی اب مزید پھیلتی جا رہی ہے اور اس وقت کابل میں قائم افغان حکومت کو ملک کے 34صوبوں میں سے 29میں طالبان اور داعش کے جنگجو ؤں کے خلاف سخت مزاحمت کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے۔افغانستان میں بڑھتی ہوئی خانہ جنگی کے باعث رواں سال یکم جنوری سے 23مئی تک متاثرہ علاقوں کے ایک لاکھ تین ہزار سے زائد افراد اپنے گھروں کو چھوڑ کر محفوظ مقامات کے طرف نقل مکانی کر گئے ہیں،اور چونکہ افغان نیشنل آرمی اور امریکی حمایت یافتہ فورسز افغانستان میں لوگوں کو سیکورٹی فراہم کرنے میں ناکام ہو چکی ہیں اس لئے بے گھر افراد (آئی ڈی پیز) کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔اقوام متحدہ کے انسانی امور کے کوآرڈنیشن دفتر ( او سی ایچ اے) کی طرف سے جاری کردہ تازہ رپورٹ کے مطابق سال 2017کے پہلے پانچ ماہ کے دوران افغانستان میں امن و امان کی صورت حال مزید ابتر ہو چکی ہے۔ افغان حکومت کے دعوؤں کے برعکس کہ جنگ زدہ افغانستان میں امن و امان کی صورت حال اب بہتر ہو رہی ہے او سی ایچ اے کے اعدادوشمار بتاتے ہیں کہ خانہ جنگی پورے افغانستان میں پھیل رہی ہے اور ملک کے تقریبا تمام شمالی علاقوں میں طالبان نے اپنا قبضہ جما لیا ہے۔اقوام متحدہ کے انسانی امور کے کوآرڈنیشن دفترکی رپورٹ کے مطابق ملک کے 399اضلاع میں سے 139میں افغان حکومت کا کوئی کنٹرول نہیں ہے اورآئے روز لوگوں کی بڑی تعداد ان اضلاع کو چھوڑ رہی ہے۔

ا و سی ایچ اے رپورٹ

مزید :

صفحہ آخر -