حکومتی دعوے کھوکھلے، بجلی کی بندش نے روزہ دار تڑپا دیئے، ملتان میں تاجروں کا احتجاجی مظاہرہ

حکومتی دعوے کھوکھلے، بجلی کی بندش نے روزہ دار تڑپا دیئے، ملتان میں تاجروں کا ...

  

ملتان، بدھلہ سنت، چوک میتلا، میلسی، وہاڑی ، بارہ میل، نواں شہر، کہروڑ پکا، حاصل پور، کلروالی، داجل، صادق آباد، سمہ سٹہ، منچن آباد، خان پور، کوٹ سمابہ، راجن پور، بنگلہ منٹھار (جنرل رپورٹر، سٹاف رپورٹر، نمائندگان) بجلی کی طویل اور غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ ، کئی علاقوں میں ٹرانفسارمر جل گئے 20 روز (بقیہ نمبر43صفحہ7پر )

سے تبدیل نہیں کیے گئے ‘ شہری سراپا احتجاج ملتان سے جنرل رپورٹر کیمطابق بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خلاف میڈیسن مارکیٹ کے تاجروں کا احتجاجی مظاہرہ‘ جھولیاں اٹھا کر حکومت کو بددعائیں دیں۔ احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے چےئرمین ملک کامران نذیر اور سینئر نائب صدر چوہدری امجد نے کہا کہ رمضان المبارک میں کم سے کم لوڈشیڈنگ کے حکومتی دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے ہیں سحری و افطاری کے علاوہ سارا دن بجلی صرف چند منٹوں کے لئے فراہم کرکے گھنٹوں گھنٹوں بند رکھی جاتی ہے جس کی وجہ سے روزہ داروں کا برا حال ہوگیا ہے اور لاکھوں مالیت کی ادویات بھی ٹمپریچر پورا نہ ہونے کے باعث خراب ہورہی ہیں ۔ جنرل منیجر آپریشن میپکو انجینئر سرفرازاحمد ہراج نے کہا ہے کہ میپکو ریجن کے زیرانتظام علاقوں میں سحری، افطاری اور تراویح کے اوقات میں بجلی کی بلاتعطل فراہمی کا سلسلہ جاری ہے ۔میپکو ہیڈکوارٹر ، پاورکنٹرول سنٹر اور سرکلوں کی سطح پر ٹیمیں بجلی کی فراہمی کو مانیٹرکررہی ہیں ۔صارفین کی شکایات کے بروقت ازالہ کے لئے پاورکنٹرول سنٹر اور سرکلوں کی سطح پر مانیٹرنگ ٹیمیں 24گھنٹے خدمات سرانجام دے رہی ہیں ۔ صارفین غیر علانیہ لوڈشیڈنگ اور ٹرانسفارمرز جلنے یا خراب ہونے کی شکایات کی صورت میں میپکو پاورکنٹرول سنٹر کے ٹول فری نمبر 0800-63726، 0345-8189213، 0345-8189210،061-9220321،061-9220322اور061-9220323پر رابطہ کرسکتے ہیں ۔ ملتان سمیت میپکو ریجن میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ ‘وولٹیج کی کمی اور ٹرپنگ نے صارفین کی زندگی اجیرن کر دی ۔عوام میں اشتعال بڑھنے لگا ۔بجلی کی بندش،غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ اور خراب ٹرانسفارمرز کی تبدیلی نہ ہونے پر امن و امان کی صورتحال خراب ہونے کا خدشہ پیدا ہو گیا۔ اس بارے میں حکومت کو ایک سرکاری ادارے نے ر پورٹ دی ہے کہ بجلی کی فراہمی کی صورتحال کو فوری طور پر بہتر نہ بنایا گیا تو پشاور اورکے پی کے جیسی صورتحال کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ میپکو ریجن میں بجلی کا بحران بدستور قائم ہے گزشتہ روز بھی ملتان شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی کا بدترین بحران رہا۔ سیوڑہ چوک، شاہ رکن عالم ،نیوملتان کے علاقوں میں بجلی کی فراہمی متاثر ہوئی۔ بدھلہ سنت سے نامہ نگار کیمطابق بدھلہ سنت اور اسکے گردونواح میں بجلی کی بار بار ٹرپنگ ہونے،لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں اضافہ ہو گیا ہے جسکی وجہ سے روزہ داروں کی واپڈا نے پہلے ہی دن چیخیں نکلوا دی ہیں روزہ دار گرمی کے مارے نڈھال ہو گئے شہریوں جن میں ناصر محمود ،دلبر حسین ،محمد ارشد،محمد اکبر،چوہدری شریف،محمد ابوبکر،آصف امین ،نعیم دلشاد،احسن علی،اکرام الحق،احسان عابد و دیگر نے چیف ایگزیکٹو ملتان سے نوٹس لیتے ہوئے لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ کم کرنے ،بار بار ٹرپنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے چوک میتلا سے نامہ نگار کیمطابق ماہ رمضان کا پاک مہینہ آتے ہی واپڈا افسران ہڈ دھرمی پر اتر آئے عام اوقات میں لوڈ شیڈنگ کے علاوہ نماز تراویح اور سحری افطاری کے وقت لوڈ شیڈنگ کرنے لگے شہری شدید گرمی سے تڑپنے لگے چوک میتلا اور گردو نواح کے شہریوں محمد شاہدطارق ارشد جبار ریاض شاکر یٰسین الطاف اللہ دتہ خوشی محمد اکرام ارشاد فیاض و دیگرنے شدید احتجاج کیا میلسی سے نمائندہ پاکستان کیمطابق میلسی میں رمضان المبارک میں بھی افطاری سے قبل گیس کی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ، شدید گرمی کے موسم میں پہلی بار محکمہ سوئی گیس کی جانب سے گھریلو صارفین کیلئے گیس کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے اور افطاری سے قبل گیس بند کر دی جاتی ہے جس سے افطاری بنانے کیلئے خواتین کو شدید دشواری کا سامنا ہوتا ہے گیس کی بندش کا یہ سلسلہ رات کو جاری رکھا جاتا ہے میلسی سے نامہ نگار کیمطابق حکومتی دعوے ادھورے رہ گئے۔ میلسی اور گردونواح میں سحری اور افطاری کے اوقات میں بھی بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ سلسلہ جاری، شدید گرمی میں فرزند اسلام کو روزے میں شدید پریشانی کا سامنا رہا۔سارا دن بجلی نہ ہونے کی وجہ کئی روزے دار بے ہوش ،پانی کی بوند بوند کو شہری ترس گئے حکومت اور وپڈا والوں کو بد دعائیں دینے لگے وہاڑی سے بیورورپورٹ ، نامہ نگار کیمطابق بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ نما ز ، ترواویح ، سحری اور افطاری کے وقت دھڑلے سے لوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے اور حکومتی حکم ہوا میں اُڑا دیا جس پر تاجروں خورشید جوئیہ ، چودھری سرفراز ، شیخ ظفر ، شیخ محمداسلم ودیگر نے حکومت سے بجلی کی طویل غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کا مطالبہ کیا ہے بارہ میل سے نامہ نگار کیمطابق حکومت کی طرف سے جاری کردہ شیڈول کی پہلے روز ہی دھجیاں اڑا دی گئیں۔ نماز تراویح اور سحرو افطار کے وقت بجلی کی لوڈ شیڈنگ جاری رہی ۔ ماہ رمضان کا پہلا روزہ بجلی کی طویل لوڈ شیڈنگ میں شدید گرمی کی حالت میں گذرا جس سے روزہ دار حکومت کو کو ستے دکھائی دئیے ۔بجلی ہونے کے وقت بھی وولٹیج کا مسئلہ رہا اور دن بھر وولٹیج کم ہونے کی وجہ سے پانی کی موٹریں اور پنکھے نہ چلے ۔ نواں شہر سے نمائندہ پاکستان کیمطابق بارہ میل گردونواح میں شدید گرمی کے باعث عوام پریشان سڑکیں و بازار ویران ہو گئے درجہ حرارت 48سینٹی گریڈ تک جا پہنچا ،عوام نے ٹیوب ویلوں اور نہروں کا رخ اختیار کر لیا کولڈ ڈرنک اور گنے کے رس والی اور برف والی دکانوں پرلوگوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں ، غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے کاروباری سرگرمیاں معطل ہو کر رہ گئیں رمضان المبارک میں لوڈ شیڈنگ اور نماز تراویح کے دوران بار بار بجلی کا آنا جانا موجودہ حکمرانوں کے لیے لمحہ فکریہ ہے ۔ کہروڑ پکا سے سٹی رپورٹر کیمطابق تحصیل کہروڑپکا کے نواحی علاقوں قادر پور، امیر پور سادات ،نور شاہ گیلانی، چیلے واہن ،کوٹیہ ،مسہ کوٹھا ،رندجادہ، رپڑ، جمرانی واہ، کھجی والہ، امیر پور سٹیشن رانا واہن و دیگر علاقوں میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کے ساتھ ساتھ غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے گذشتہ دونوں روزتراویح، سحری و افطاری کے دوران بجلی غائب ہوجاتی ہے گرمی اور اندھیرے میں تراویح پڑھنا اور روزہ رکھنا انتہائی مشکل ہوجاتا ہے جبکہ افطاری کے دوران بھی بجلی غائب ہوتی ہے شہریوں رضوان احمد نعیم خان کلیم احمد عبدالستار شاہد محمود قیصر فرید عزیز مجیدمعاویہ ناصر اقبال فیروز عمر و دیگر نے مبینہ طور پر نمائندے کو بتایاکہ واپڈا والوں کو حکومت کی طرف سے ہدایات ہیں کہ دیہی علاقوں میں بجلی کو بند کردیا جائے اور شہری علاقوں میں بجلی کو پورا کیا جائے تاکہ میڈیا پر شور شرابے کو کم کیا جاسکے حاصل پور سے نمائندہ خصوصی کیمطابق شہر میں رمضان المبارک کی آ مد پر پینے کا پانی اور بجلی غائب ہو گئی ہے ۔شہری خاص طور پر خواتین اور بچے دور دراز سے پینے کا پانی بھر کر لانے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔بجلی کی لوڈ شیڈ نگ میں بھی اضافہ ہو رہا ہے ۔روزہ داروں کو شدید پر یشا نی کا سامنا کر نا پٹر رہا ہے ۔چک کٹورہ سے شہر کو واٹر سپلائی کا کروڑوں روپے کا منصو بہ کرپشن کی وجہ سے مکمل طور پر فلاپ ہو چکا ہے ۔ڈالے گئے نا قص پا ئپ آ ئے روز جگہ جگہ سے پھٹ جاتے ہیں ۔جس کی وجہ سے کئی کئی روز شہر میں پانی کی سپلائی بند رہتی ہے ۔اور اکثر علاقوں میں پینے کا پانی پورا سال نایاب رہتا ہے شہر کے سیاسی وسماجی رہنماوں رانا قمر الطاف ۔میاں عبدالجبار ایڈووکیٹ ۔ملک مقبول احمد ۔رانا انصار الز ماں ۔چوہدری عبدالروف ۔منصور خاں ۔ملک ارشد ۔رانا احمد الطاف ۔اسلم خاں نے چیف سیکرٹری پنجاب سمیت دیگر اعلی حکام ے نوٹس لیکر کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ کلر والی سے نامہ نگار کیمطابق کلروالی فیڈر سے بجلی کی آنکھ مچولی جاری ،سحری افطاریاور تراویح کے اوقات میں بجلی بند ،روزہ داروں کا شدید احتجاج ،ایس ڈی او کے خلاف فوری کاروائی کا مطالبہ داجل سے نامہ نگار کیمطابق رمضان شریف میں کم لوڈ شیڈنگ کرنے کے حکومتی دعو ے دھرے کے دھرے رہ گئے روزہ داروں کو پورے دن میں تین گھنٹے بجلی بھی نہ ملی ٹرپنگ اور کم وولٹیج کے باعث پانی کی موٹریں نہ چلائی جا سکیں ان خیلالات کا اظہار قربان علی جندانی،ملک صادق حسین دمڑیہ،سجاد حسین لنگاہ،ملک ساجد بھٹو دمڑیہ ،شاہد حسین زرگر ،محمدعبدالستار،محمد رضوان ،محمد اسلم ،قاری محمد اطہر و دیگر نے کہا کہ پاکستان اگرچہ اسلام کے نام پرمعروض و جود میں آیا مگر افسوس ناک پہلویہ ہے کہ ماہ مقدس کی آمد کے ساتھ مہنگائی کا طوفان آجاتا ہے اورعام دنوں میں جو لوڈ شیڈنگ کا شیڈول ہوتا ہے وہ دگنا تین گنا بڑھا دیا جاتا ہے انہوں نے بتایا کہ شدید گرمی اور جس کے باعث کئی لوگوں کے بے ہوش ہونے کی خبریں مل رہی ہیں ساڑھے سولہ گھنٹے کا روزہ ہے اور صر ف تین گھنٹے بجلی دی گئی ماضی میں ہونے والی بد تریں لوڈ شیڈنگ میں بھی اس کی مثال نہیں ملتی ایسا لگتا ہے کہ حکومت کے خلاف سوچی سمجھی سازش ہے انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس کا نوٹس لیکر ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کرے ۔ صادق آباد سے تحصیل رپورٹر کیمطابق ماہ صیام شروع ہوتے ہی سورج نے آگ برسانی شروع کر دی جبکہ دوسری جانب واپڈا نے بھی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شروع کر دیا ہے ، ممبر قومی اسمبلی ،چےئرمین قائمہ کمیٹی پانی وبجلی سردار ارشد لغاری کی طرف سے شہر میں نئے فیڈر قائم کرنے اور گرڈ اسٹیشن کو اپ گریڈ کرنے اور نئی تاریں ڈالنے کے اعلانات کئے گئے جن پر کروڑوں روپے خرچہ ظاہر کیا گیا مگر ماہ رمضان میں بجلی کی بار بار ٹرپنگ کا سلسلہ جاری ہے کم وولٹیج کی وجہ سے الیکٹرونکس کی اشیاء جل رہی ہیں لوڈ شیڈنگ اور شدید گرمی کی وجہ سے روزے داروں کو مشکلات کا سامنا ہے شہریوں محمد شفیق‘ تنویر الحسن‘ مقصود عباس‘محمد صادق‘ عبدالرزاق‘ سلطان محمود‘ عدنان الحسن‘شبیر احمد‘ محمد عمران ودیگر نے بتایا کہ صادق آبادکے عوام کیساتھ امتیازی سلوک کیاجارہا ہے بجلی کیساتھ ساتھ سوئی گیس کی بھی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے ایم این اے سردار ارشد لغاری کو عوام کی مشکلات حل کروانے کیلئے اقدامات کرنے چاہیے ورنہ عوام آئندہ الیکشن میں ووٹ کے ذریعے احتساب کرنے پر مجبور ہوں گے ۔ سمہ سٹہ سے نامہ نگار کیمطابق خانقاہ شریف، سمہ سٹہ ‘ 24 گھنٹہ گزرنے کے باوجود ٹرانس فارمرتبدیل نہ کیا‘شہری بو ندبوندپانی کوترس گئے‘مساجدمیں پانی غائب نمازیوں کوشدیدپریشانی بچے بوڑھے گرمی کی شدت سے بلبلا اٹھے روزہ داروں کا شدید گرمی میں کڑا امتحان سحری افطاری میں گھروں کے چولھے ماند پڑ گئے تفصیل کے مطابق خانقاہ شریف، سمہ سٹہ محلہ قاسم آباد،مدنیہ کانونی،پہاڑشاہ، رفیق آباد میں کل دوپہر سے بجلی کی تار ٹوٹنے اورٹرانس فارمر جلنے کی وجہ سے شہری گرمی کی شدت سے نڈھال ہو گئے سحری وافطاری میں پانی میسر نہیں بچے بوڑھوں اورروزہ داروں کا کڑا امتحان رہا‘ نمازی مسجدوں میں وضو کے بغیر جانے پرمجبورہوچکے ہیں اہل علاقہ نے بتایا ہر سال ہمیں اس آفت کو برداشت کرنا پڑتا ہے اور اپنی جیب سے جیب خرچ بھی وصول کئے جاتے ہیں منچن آباد سے تحصیل رپورٹر کیمطابق محلہ شیو پورہ ،شمس والا ،طارق کالونی ،ریلوے اسٹیشن میں 20 گھنٹے گزرنے کے باوجود بجلی بحال نہ ہو سکی ،بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے روزہ داروں کو شدید مشکلات میں ڈال دیا ،،مساجد میں نمازی وضو اور طہارت کرنے سے قاصر جبکہ مستورات گھروں میں شدید اضطراب کا شکار ،شدید گرمی اور حبس کے باعث مقامی شہری سخت پریشانی میں مبتلا ،متاثرہ علاقوں کے مکینوں نے مطالبہ کیا ہے کہ غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بند کیا جائے ورنہ روزہ دار سڑکوں پر احتجاج کریں گے ، کبیروالا سے نمائندہ پاکستان کیمطابق رمضان المبارک میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کم سے کم کرنے کے حکومتی احکامات میپکو خان پور نے ہوا میں اڑا دیئے‘ 12 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ نے روزہ داروں کی چیخیں نکلوا دیں‘ خواتین اور بچے شدید گرمی میں نڈھال ہوگئے جبکہ مسلسل بجلی کی لوڈشیڈنگ سے برف بھی ناپید ہوگئی۔ خان پور میں درجہ حرارت 49 ڈگری کراس کرگیا۔ تحریک انصاف کے رہنما راجہ محمد سلیم نے بجلی کی لوڈشیڈنگ کم کرنے کے حوالے سے ایس ڈی او واپڈا خان پور جام جمیل سے ساتھیوں سمیت ملاقات کی اور 12 گھنٹے کی غیر اعلانیہ بجلی کی لوڈشیڈنگ پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے ماہ رمضان میں کم سے کم لوڈشیڈنگ کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی مگر تمام حکومتی وعدوں اور یقین دہانیوں کے باوجود رمضان المبارک میں بھی 10 سے 12 گھنٹے تک بجلی کی لوڈشیدنگ ہورہی ہے جوکہ عوام کو بیوقوف بنانے اور ان کو دھوکہ دینے کے مترادف ہے۔ ایس ڈی او واپڈا نے کہا کہ بجلی کے شارٹ فال بڑھنے کی وجہ سے بجلی کی لوڈشیڈنگ زیادہ ہوجاتی ہے کوشش کریں گے کم سے کم لوڈشیڈنگ ہو۔ اس موقع پر پی ٹی آئی کارکنوں نے ایس ڈی او کے دفتر میں شدید نعرے بازی کی اور کہا کہ اگر یہی صورتحال رہی تو واپڈا دفتر کا گھیراؤ کریں گے۔اس موقع پر مختیار گجر‘ چوہدری مشتاق‘ فوجی ارشد‘ رانا آصف‘ نعیم مغل‘ عارف‘ بلال اقبال‘ حامد اقبال‘ عدنان گجر‘ یامین محمدی‘ خالد‘ محبوب ودیگر موجود تھے۔ کوٹ سمابہ سے نامہ نگار کیمطابق کوٹ سمابہ میں ماہ رمضان کے دوسرے روزہ کے دن بھی بجلی کی آنکھ مچولی جاری ہے۔اس سلسلے میں لوڈ شیڈنگ اور کم وولٹیج کے باعث کوٹ سمابہ کے شہری شدید مشکل کا شکار رہ شہریوں نے چیف میپکو ملتان سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے راجن پور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کیمطابق ضلع راجن پور میں گذشتہ روز سخت گرمی رہی درجہ حرارت 48 ڈگری ریکارڈ کیا گیا سخت گر می اور لو کے باعث سڑکیں اور بازار بھی سنسان رہے سخت گرمی کے ساتھ ساتھ واپڈا کی غیراعلانیہ لوڈشیڈ نگ کاسلسلہ بھی جاری رہا برف بھی مہنگے داموں فروخت کی جارہی ہے ۔بنگلہ منٹھار سے نمائندہ پاکستان کیمطابق چک نمبر255 پی میں گزشتہ بیس روز سے ٹرانسفارمر جل گیا ہے،جس سے چک کو بجلی کی سپلائی بند ہو گی ہے،گرمی کی شدید لہر میں روزے دار پریشانی کا شکار ہے،گھروں ،مسجدوں میں پانی نایاب لوگ دور نہر سے پانی بھرنے پر مجبور،انسانوں کے ساتھ ساتھ جانور بھی متاثرہو رہے ہیں،واپڈا حکام گزشتہ بیس دنوں سے ٹل مٹول سے کام لے رہے ہیں جبکہ ایس ڈی او اسرار احمد سے علاقہ مکینوں کی بات ہوئی تو اس نے بھی تسلی دیتے ہوئے دو دن میں بجلی بحال ہونے کی یقین دہانی کروائی مگر پھر بھی بجلی بحال نہ ہو سکی۔ رمضان المبارک کے دوران روزہ داروں کو دی جانے والی اذیت پر علاقہ کے لوگوں نے شدید احتجاج اور نعرہ بازی کی،اہل علاقہ حاجی عمرخطاب،محمدبشیر،عاشق علی،صفدر،عمر کھرل ودیگر نے واپڈا اہلکاروں کی بے حسی کیخلاف پر احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ اگر فوری طور پر نیا ٹرانسفارمر نہ لگایا گیا تو وہ ایکسین آفس کے باہر دھرنہ دیں گے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -