بھارت جنوبی تبت میں پل بنانے سے گریز کرے:چین کی وارننگ

بھارت جنوبی تبت میں پل بنانے سے گریز کرے:چین کی وارننگ
بھارت جنوبی تبت میں پل بنانے سے گریز کرے:چین کی وارننگ

  

بیجنگ(صباح نیوز)سرحدی تنازع پر چین اور بھارت میں اختلافات بڑھ گئے۔چین کی وزارت خارجہ کے حکام نے نئی دہلی کو انتباہ کیاہے کہ وہ جنوبی تبت میں پل بنانے سے گریز کرے۔بھارتی میڈیا کے مطابق چین کی وزارت خارجہ کے حکام نے بیجنگ سے جاری بیان میں کہاکہ اروناچل پردیش بھارت کی ریاست نہیں تبت کا جنوبی علاقہ ہے۔

’لوگ سمجھتے ہیں میری عمر40 سال ہے لیکن دراصل میں 70 برس کی ہوں اور اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ پچھلے 28 برس کے دوران میں نے یہ چیز ایک دفعہ بھی نہ کھائی‘ 70 سالہ خاتون نے جوانی کا راز بتادیا، پاکستانیوں کی پسندیدہ چیز کھانے سے منع کردیا,خبر پڑھنے کیلئے کلک کریں

بھارت جنوبی تبت میں کسی بھی قسم کا بنیادی ڈھانچہ بنانے سے اجتناب کرے۔ بھارت پل کے ذریعے ارونا چل پردیش کو ریاست آسام سے ملانا چاہتا ہے۔مودی حکومت کا دعوی ہے کہ اروناپرچل دیش بھارت کا اٹوٹ انگ ہے۔چینی وزارت خارجہ کے حکام نے انتباہ کیا کہ بھارت سرحدی تنازعات حل ہونے سے پہلے بنیادی ڈھانچے پر کام کرنا بند کردے۔جنوبی تبت میں کسی قسم کے بنیادی ڈھانچے پر کام ناقابل قبول ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -