23 خطرناک اشتہاریوں کو مقابلوں میں مارنے کیلئے ”ڈیتھ وارنٹ “ جاری

23 خطرناک اشتہاریوں کو مقابلوں میں مارنے کیلئے ”ڈیتھ وارنٹ “ جاری
23 خطرناک اشتہاریوں کو مقابلوں میں مارنے کیلئے ”ڈیتھ وارنٹ “ جاری

  

لاہور (ویب ڈیسک) لاہوردہشت گردی ،پولیس مقابلے ،قتل ،ڈکیتی قتل ،بھتہ خوری ،اغوا برائے تاوان جیسی سنگین وارداتوں میں ملوث پنجاب کے 23 خطرناک اشتہاری ملزمو ں کو پولیس مقابلوں میں ہلاک کرنے کے ڈیتھ وارنٹ جاری کردئیے گئے۔ذرائع کے مطابق پنجاب میں بڑھتے ہوئے جرائم کے پیش نظر اعلیٰ پولیس افسرو ں نے اہلکاروں کو انتہائی مطلوب اشتہاری ملزمو ں کی فوری گرفتاری کا ٹاسک دیا ،ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا نے خفیہ اداروں کی رپورٹ کے بعد صوبے کے تمام آر پی اوز، ڈی پی اوز کو ہدایات جاری کی تھیں کہ بعض خطرناک اشتہاری ملز مو ں کی پشت پناہی پولیس اہلکار و افسر بھی کررہے ہیں اورایسے اشتہاریوں سے قبضہ ، بھتہ خوری ،اغوا جیسے سنگین نوعیت کے وارداتیں بھی کروارہے ہیں.

ذرائع کا کہنا ہے کہ اعلی ٰپولیس افسرو ں کو ایسے کرپٹ افسرو ں و اہلکاروں کی فہرستیں بھی دی گئیں جس میں پنجاب کے تین ڈی ایس پیز ،دس انسپکٹر ،سب انسپکٹرز ،اے ایس آئی اور کانسٹیبل شامل تھے ، آر پی اوز اور ڈی پی اوز نے ایسے کرپٹ پولیس افسرو ں و اہلکاروں کو شامل تفتیش کیا اورکئی افسرو ں کے خلاف سخت محکمانہ کارروائی کرنے کی رپورٹ بناکر آئی جی پنجاب کو بھجو ا ئی اور مذکورہ کرپٹ پولیس افسرو ں کے خلاف مقدمات درج کرکے انہیں محکمہ سے فارغ کرنے کی بھی درخواست کی گئی، ذرائع کا کہنا ہے کہ اس رپورٹ کے بعد بعض پولیس افسر وں و اہلکاروں نے نوکری بچانے کیلئے خطرناک اشتہاری ملزمو ں نادر عرف لاکھا ،ملک دلاور ،شوکی ،شمیم ، رمضان عرف جانی ،شہباز عرف لاوا وغیرہ جن کے سر پر لاکھوں روپے انعام مقرر کیا گیا تھا کو دھوکے سے پکڑ کر اپنے نجی ٹارچر سیل لے گئے انکی نشاندہی پر کئی اشتہاری ملزمو ں کو بھی گرفتار کیا پولیس نے پکڑے گئے تمام اشتہاری ملزمو ں کی گرفتاری نہ ڈالی بلکہ اس بارے میں متعلقہ تھانوں کی پولیس کو بھی اطلاع نہ ہونے دی تمام واقعات کو خفیہ طور پر رکھا گیا .

ذرائع کا کہنا ہے کہ بعض بااثر سیاسی شخصیات بھی اشتہاری ملزمو ں کو چھڑانے کی کوشش کررہی ہیں جو انکے ناجائز کام کررہے تھے ، اشتہاری ملزمو ں نے سیاسی شخصیات کے لئے کروڑوں روپے مالیت کی جائیداد پر قبضہ کیا ،کئی افراد کو قتل کرانے کا بھی انکشاف ہوا ہے ،سندر کے علاقے میں مبینہ پولیس مقابلے میں پار ہونے والے اشتہاری ملزم نادر عرف لاکھا کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ پولیس نے اشتہاری ملزم جس کے سر پر بیس لاکھ کا انعام مقرر کیا تھا اسکے خلاف درجنوں سنگین نوعیت کے مقدمات درج ہیں پولیس نے اشتہاری ملزم لاکھا کو ایک ہفتہ قبل ہی گرفتار کرلیا تھا تفتیش کے بعد اسے مبینہ پولیس مقا بلے میں پار کردیا گیا .

ذرائع کا کہنا ہے پولیس کے ہاتھوں گرفتار ہونے والے انتہائی خطرناک اشتہاری ملزمو ں کو اعلیٰ پولیس افسرو ں کی جانب سے جعلی پولیس مقابلوں میں پار کرنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں، ذ رائع کا کہنا ہے کہ بعض اشتہاری ملزم جعلی پولیس مقابلوں سے خوفزدہ ہوکر علاقہ غیر پہنچ گئے ہیں تاہم اس سلسلے میں پولیس کا کہنا ہے کہ پولیس مقابلے جعلی نہیں ہوتے اشتہاریوں کی جانب سے مزاحمت ہوتو پولیس جوابی فائرنگ کرتی ہے جس سے اشتہاری ہلاک ہوجاتا ہے ، اشتہاریوں کو گرفتار کرنے کی مہم جاری ہے۔

مزید :

لاہور -