شراب نہیں پی،نشہ ڈاکٹر کی تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا:گالفر ٹائیگر ووڈز

شراب نہیں پی،نشہ ڈاکٹر کی تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا:گالفر ...
شراب نہیں پی،نشہ ڈاکٹر کی تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا:گالفر ٹائیگر ووڈز

  

فلو ریڈا(این این آئی)گالف کے کھلاڑی ٹائیگر وڈز نے کہا ہے کہ فلوریڈا میں ڈرائیونگ کے دوران ان کی گرفتاری کی وجہ شراب نہیں تھی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ٹائیگر وڈز پر نشہ آور اشیا کے استعمال کے بعد ڈرائیونگ کرنے کا الزام لگا تاہم انہوں نے بتایا کہ شراب نہیں پی بلکہ یہ ڈاکٹر کی تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا۔

’لوگ سمجھتے ہیں میری عمر40 سال ہے لیکن دراصل میں 70 برس کی ہوں اور اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ پچھلے 28 برس کے دوران میں نے یہ چیز ایک دفعہ بھی نہ کھائی‘ 70 سالہ خاتون نے جوانی کا راز بتادیا، پاکستانیوں کی پسندیدہ چیز کھانے سے منع کردیا,خبر پڑھنے کیلئے کلک کریں

انھوں نے کہا کہ میں نے جو کیا میں اس کی شدت کو سمجھتا ہوں اور اپنے فعل کی پوری ذمہ داری لیتا ہوں۔جوپیٹر کے دیہی علاقے میں پولیس نے جب وڈز کو حراست میں لیا تو ان کی تصویر بھی کھینچی جس میں وہ بے ترتیب دکھائی دئیے۔اپنے بیان میں وڈز کا کہنا ہے کہ میں چاہتا ہوں کہ لوگوں کو معلوم ہو کہ میں نے شراب نوشی نہیں کی تھی ٗجو ہوا وہ تجویز کردہ دوا کا غیر معمولی ری ایکشن تھا۔مجھے معلوم نہیں تھا کہ دواؤں کا مجھ پر اتنا زیادہ اثر ہو گا۔ انھوں نے اپنے اہل خانہ ٗدوستوں اور مداحوں سے معافی بھی مانگی اور کہا کہ وہ خود سے بھی بہت توقعات رکھتے ہیں۔

پولیس ریکارڈ کے مطابق 41 سالہ وڈز کو گرینج کے مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے جیوپٹر سے گرفتار کیا گیاانھیں گرفتاری کے ساڑھے ساڑھے سات گھنٹوں بعد پالم بیچ کاؤنٹی کی جیل سے رہا کیا گیا۔ریکارڈ کے مطابق انھیں اس تحریری یقین دہانی کے بعد رہائی ملی جس میں انھوں نے وعدہ کیا تھا کہ وہ مستقبل کی قانونی کارروائی میں بھی مکمل تعاون کریں گے۔

یاد رہے کہ وڈز کی کمر کی سرجری ہوئی تھی اور گرفتاری سے قبل آنے والے بیانات میں انھوں نے کہا تھا کہ وہ بہت تکلیف سے گزرے ہیں اورحالیہ برسوں میں ان کی صحت اچھی نہیں رہی۔14 بار گالف کے چمپئن رہنے والے وڈز پر 2009 میں بھی ڈرائیونگ کے دوران غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرنے پر سزا ملی تھی۔بعد میں انھوں نے غیر ازدواجی تعلقات قائم کرنے پر عوام سے معافی مانگی تھی۔ ان سکینڈلز کی وجہ سے انھیں بہت سے سپانسرز سے بھی ہاتھ دھونے پڑے تھے اور انھوں مقابلوں میں حصہ لینے کے بجائے کریئر میں بریک بھی لیا۔

مزید :

کھیل -