’میری آنکھوں کے سامنے میری گرل فرینڈ کو ریپ کیا جا رہا ہے ۔۔۔ ‘ یورپی ملک میں نوجوان کا پولیس کو فون آگے سے جواب کیا ملا؟ ایسا جواب کہ پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا

’میری آنکھوں کے سامنے میری گرل فرینڈ کو ریپ کیا جا رہا ہے ۔۔۔ ‘ یورپی ملک میں ...
’میری آنکھوں کے سامنے میری گرل فرینڈ کو ریپ کیا جا رہا ہے ۔۔۔ ‘ یورپی ملک میں نوجوان کا پولیس کو فون آگے سے جواب کیا ملا؟ ایسا جواب کہ پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا

  

برلن (نیوزدیسک)ہمارے ہاںپولیس کے غیر ذمہ دارانہ رویے پر ہر وقت لعن طعن کی جاتی ہے لیکن گزشتہ دنوں جرمنی کی پولیس نے ایک ایسا گل کھلایا کہ آپ ہماری پولیس کی غیر ذمہ داری کو بھی بھول جائیں گے ۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ایک 26 سالہ جرمن نوجوان اپنی 23 دوست کے ساتھ پکنک منانے کیلئے بون شہر کے سیاگو نیچر ریزرو گیا ہوا تھا۔ دونوں نے ہرے بھرے درختوں کے درمیان ایک پر فضا مقام پر خیمہ لگا رکھا تھا۔ اچانک ان کے خیمے میں ایک افریقی شخص داخل ہوا جس نے خنجر دکھا کر نوجوان کو دھمکی دی کہ وہ اپنی جگہ سے ہلا تو اسے قتل کر دیا جائے گا۔ پھر وہ لڑکی کو کھینچتا ہوا کچھ فاصلے پر درختوں کے جھنڈ میں لے گیا اور اسے زیادتی کا نشانہ بنا نا شروع کر دیا ۔ اس دوران جرمن نوجوان نے موقع پا کر پولیس کو کال کی اور بتایا کہ اس کی دوست کی اس کے سامنے عصمت دری کی جا رہی ہے ۔ دوسری جانب فون اٹھانے والی خاتون پولیس اہلکار نوجوان کی بات سن کر کہنے لگی ” مجھے لگتا ہے تم میرے ساتھ مذاق کر رہے ہو۔ “ خاتون پولیس اہلکار نے نوجوان کی بات کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے فون بند کر دیا۔

ریسلنگ مقابلے میں فائٹر خون و خون ہو کرہار گیا، پھر میچ ختم ہو ا تو اس کی ماں رِنگ میں آگئی اور اپنے بیٹے کو گلے لگانے کی بجائے اس کے ساتھ ایسا کام کر دیا کہ دیکھنے والوں کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں

اب نوجوان کے پاس بیچارگی سے اپنی دوست کی عصمت دری کا دردناک منظر دیکھنے کے سوا کوئی چارہ نہ تھا۔ جب افریقی شخص لڑکی کی بے حرمتی کے بعد وہاں سے فرار ہو گیا تو جرمن نوجوان اسے ساتھ لے کر وہاں سے پیدل نکلا تاکہ کہیں مدد تلاش کر سکے۔ راستے میں اس نے ایک بار پھر اس نے پولیس کو کال کی لیکن دوبارہ اس کا مذاق اڑا کر فون بند کر دیا گیا ۔

بعدازاں جب اس واقعہ کی اطلاع میڈیا تک پہنچی تو پورے ملک میں ہنگامہ برپا ہو گیا۔ پولیس ڈپارٹمنٹ نے ایک بیان میں معذرت کی اور اعتراف کیا کہ دو نوں بار نوجوان کی کال کو غیر ذمہ دارانہ انداز میں لیا گیا اور کال سننے والی اہلکار معاملے کی سنگینی کو بھانپنے میں ناکام رہی۔ پولیس نے جرمن لڑکی کی عصمت دری کرنے والے 31 سالہ افریقی شخص کو بھی گرفتار کر لیا ہے۔ ڈی این اے ٹیسٹ سے اس کا جرم ثابت ہو چکا ہے اور اس کے خلاف قانونی کاروائی جاری ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -