اگر ہونے والی مائیں یہ ایک چیز باقاعدگی سے کھائیں تو ان کے بچوں کو بھی سانس کی بیماریاں نشانہ نہیں بناتیں

اگر ہونے والی مائیں یہ ایک چیز باقاعدگی سے کھائیں تو ان کے بچوں کو بھی سانس کی ...
اگر ہونے والی مائیں یہ ایک چیز باقاعدگی سے کھائیں تو ان کے بچوں کو بھی سانس کی بیماریاں نشانہ نہیں بناتیں

  

لندن(نیوزڈیسک) ہر ماں کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کا پیدا ہونے والا بچہ صحت مند ہواور اب سائنسدانوں نے کہا ہے کہ اگر مائیں چاہتی ہیں کہ ان کے بچوں کامدافعتی نظام مضبوط ہوتو انہیں چاہیے کہ وہ وٹامن ڈی کا استعمال کریں۔ان کا کہنا ہے کہ مدافعتی نظام میں مضبوطی کی وجہ سے دمہ ہونے کے امکانات بھی کم ہوجاتے ہیں۔سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ تحقیق میں دیکھا گیا کہ جن ماﺅں کو ایک خاص حد سے زیادہ وٹامن ڈی دی جائے تو ان میں دمہ کے خلاف مدافعت مضبوط ہوتی ہے۔ گذشتہ تحقیقات میں بھی یہ بات پہلے بھی بتائی گئی ہے کہ اوائل عمری میں مضبوط مدافعتی نظام کی وجہ سے انسان دمہ سے محفوظ رہ سکتا ہے۔کنگز کالج لندن کے تحقیق کار پروفیسر کیتھرین ہاری لوویچ کا کہنا ہے کہ پہلی بار اس بات کا ثبوت ملاہے کہ حمل کے دنوں میںوٹامن ڈی کی اضافی مقدار دینے سے انسان کا مدافعتی نظام مضبوط ہوتا ہے۔اس کاکہناہے کہ دمہ کی تشخیص ابتدائی عمرمیںہی ہوجاتی ہے اور اگر شروع ہی سے وٹامن ڈی دی جائے تو آگے چل کر دمہ سے بچاجاسکتا ہے۔

مزید :

تعلیم و صحت -