پاکستان انجینئرنگ کونسل نے C2سے C6 تعمیراتی کمپنیوں کو اپرنٹس انجینئرز رکھنے سے مستثنیٰ قرار دیدیا

پاکستان انجینئرنگ کونسل نے C2سے C6 تعمیراتی کمپنیوں کو اپرنٹس انجینئرز رکھنے ...

  

لاہور (کامرس ڈیسک)پاکستان انجینئرنگ کونسل نے کیٹگری C2سے C6 تک کی تعمیراتی کمپنیوں کو اپنی ہی عائد کردہ اپرنٹس انجینئرز کو ملازمت پر رکھنے کی شرط سے مستثنیٰ کر دیا ہے ۔یہ استثنیٰ پاکستان انجینئرنگ کونسل کی گورننگ باڈی کے حالیہ اجلاس میں دی گئی جس میں تعمیراتی انڈسٹری اور کمپنیوں میں موجوددہ صورتحال اوراپرنٹس انجینئرز کی بھاری تنخواہوں کے مالی اثرات کا بغور جائزہ لیا گیا۔ کنسٹرکشن ایسوسی ایشن پاکستان نے اس سلسلہ میں ایک بھرپور مہم بھی چلائی ، اس سلسلے میں (CAP)کے چیئرمین سکندر حیات خٹک نے کہا پی ای سی گورننگ باڈی نے کمپنیز C-Aکیٹگری کو 3انجینئرز C-B کمپنیز کو 2انجینئرز اور C-1کمپنیز کو صرف ایک انجینئر کو ملازمت دینے کی منظوری دی ہے ۔

زیادہ سے زیادہ تنخواہوں کے مطالبہ کے معاملے پر چیئرمین سی اے پی نے کہا کہ اپرنٹس انجینئرز کے ماہانہ تنخواہ 20000روپے ہوگی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی زیادہ تنخواہ کا مطالبہ کرتا ہے تو متعلقہ اپرنٹس انجینئرز کے بارے میں پی ای سی اور سی اے پی کے چیئرمین کو بتایا جائے تاکہ ممکنہ کارروائی عمل میں لائی جائے۔انہوں نے کہا کہ مارکیٹ میں اپرنٹس انجینئرز کی عدم دستیابی کے صورت میں پی اے سی کو متعلقہ کمپنی اپنے منصوبہ جات اور درکار اپرنٹس انجینئرز کے بارے میں لکھے۔

مزید :

کامرس -