ماہ رمضان میں حضرت جبرائیل ؑ کی آمد بڑھ جاتی تو رسول خداﷺ اس خوشی میں کیا کام کرتے تھے،ایسی بات جو ہر مسلمان کے دل میں گھر کرجائے گی

ماہ رمضان میں حضرت جبرائیل ؑ کی آمد بڑھ جاتی تو رسول خداﷺ اس خوشی میں کیا کام ...
ماہ رمضان میں حضرت جبرائیل ؑ کی آمد بڑھ جاتی تو رسول خداﷺ اس خوشی میں کیا کام کرتے تھے،ایسی بات جو ہر مسلمان کے دل میں گھر کرجائے گی

  

لاہور(ایس چودھری)علامہ طاہر القادری نے ماہ رمضان کے تقدس و اہمیت کے ضمن میں رسول کریم ﷺ کے معمولات پر اپنے ایک مقالہ میں تحریر کیا ہے کہ ماہ رمضان میں حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی عادت مبارکہ یہ تھی کہ وہ صدقہ و خیرات کثرت کے ساتھ کیا کرتے تھے۔ کوئی سوالی آپﷺ کے در سے خالی نہیں لوٹتا تھا۔ رمضان المبارک میں صدقہ و خیرات کی مقدار باقی مہینوں کی نسبت اور زیادہ بڑھ جاتی۔ اس ماہ صدقہ و خیرات میں اتنی کثرت ہو جاتی کہ ہوا کے تیز جھونکے بھی اس کا مقابلہ نہ کر سکتے تھے ۔بخاری شریف میں حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ ”جب جبریلؑ امین آ جاتے تو آپﷺ کی سخاوت کی برکات کا مقابلہ تیز ہوا نہ کر پاتی۔“

حضرت جبریل علیہ السلام چونکہ اللہ تعالیٰ کی طرف سے پیغام محبت لیکر آتے تھے۔ رمضان المبارک میں چونکہ عام دنوں کی نسبت کثرت سے آتے تھے۔ اس لئے حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ان کے آنے کی خوشی میں صدقہ و خیرات بھی کثرت سے کرتے۔لہذامسلمانوں کو ماہ رمضان کے دوران سنت رسول ﷺ پر عمل کرتے ہوئے صدقہ خیرات کا بھی اہتمام کرنا چاہئے ۔

مزید :

روشن کرنیں -Ramadan -Ramadan News -