سروسز ہسپتال سے نومولود اغوا، سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے بازیاب

سروسز ہسپتال سے نومولود اغوا، سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے بازیاب

  

لاہور (کرائم رپورٹر +خبرنگار)سروسز ہسپتال کے گائنی یونٹ سے نومولود بچہ اغوا، سی سی ٹی وی کیمروں کی مدد سے اغواء ہونے والا بچہ بازیاب۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت کے ہسپتالوں سے بچوں کو اغوا کرنے والا گروہ ایک مرتبہ پھر متحرک ہو گیا ہے اور اس گروہ نے ہسپتالوں کے گائنی یونٹس کے ڈیرے ڈال لیے ہیں اور اس گروہ کے ارکان میں شامل تین عورتوں نے سروسسز ہسپتال کے گائنی یونٹ سے چیک کروانے کے بہانے محنت کش سلمان کا نومولود بچہ اغواء کرلیا۔ شاہ کوٹ کا رہائشی سلمان اپنی بیوی آمنہ کو لیکر سروسسز ہسپتال کے گائنی یونٹس لیکر آیا۔ سلمان کی بیوی کے ہاں بچہ پیدا ہونے پر ایک عورت نے ہسپتال کی ورکر کا روپ دھار کر بچے کو گود میں لے لیا اور دوگھنٹے تک وارڈ میں بیٹھی رہی رشتے دار مبارکباد دیتے رہے اس دوران عورت بچے کو چیک کروانے کے بہانے اغوا کر کے لے گئی۔ تھوڑی دیر تک واپس نہ آنے پر والدین کو شبہ گزرا جس پر ہسپتال انتظامیہ اور پولیس حرکت میں آگئی۔ پولیس نے سی سی ٹی وی کیمروں کے ذریعے رکشہ کا سراغ لگایا اور رکشہ ڈرئیور گرفتار ہونے پر شازیہ نامی خاتون کو گرفتار کر کے بچہ بازیاب کروا لیا۔ ملزمہ شازیہ نے ابتدائی تفتیش میں انکشاف کیا ہے کہ وہ پھلروان برکی کی رہائشی اور تین رکنی گروہ ہے جس میں زینب اور حلیمہ بھی شامل ہیں۔پولیس نے باقی دونوں کی گرفتاری کے لئے چھاپے مارنے شروع کردیئے ہیں اور نومولود بچے کو بازیاب کرکے والدین کے حوالے کر دیا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -