گجرات ، ختلف سیاسی جماعتوں کی طرف سے امیدواروں کا چنا ؤشروع

گجرات ، ختلف سیاسی جماعتوں کی طرف سے امیدواروں کا چنا ؤشروع

  

گجرات(بیورورپورٹ)عام انتخابات 2018 کا بگل بجتے ہی مختلف سیاسی جماعتوں کی طرف سے امیدواروں کا چناؤ شروع کر دیا گیا ہے عام انتخابات میں آزاد حیثیت سے الیکشن لڑنیوالے امیدواروں کی اکثریت دکھائی دیتی ہے پاکستان تحریک انصاف نے ماضی کی نسبت کئی پرانے چہروں کو بدل دیا ہے پاکستان پیپلز پارٹی کوعام انتخابات میں گجرات سے امیدواروں کے چناؤ میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے مناسب امیدوار نہ ملنے کے باعث جہاں پارٹی قیادت تشویش کا شکار ہے وہیں کارکنوں میں بھی مایوسی پائی جاتی ہے حلقہ این اے 69جہاں سے سابق وزیر اعلی پنجاب چوہدری پرویز الٰہی مسلم لیگ ق اور چوہدری مبشر حسین مسلم لیگ ن کے امیدوار ہیں سے پیپلز پارٹی تاحال کوئی امیدوار سامنے نہیں لا سکی جبکہ حلقہ پی پی 31سے تحریک انصاف کے چوہدری سلیم سرور جوڑا میدان میں ہیں جن کے مقابلے میں مسلم لیگ ن ‘ ق لیگ اور پیپلز پارٹی اپنا امیدوار سامنے نہیں لا سکی ‘ چند یوم قبل بلاول ہاؤس لاہور میں آصف علی زرداری کی جانب سے امیدواروں کے انٹرویوز میں گجرات شہر سے کوئی قابل ذکر امیدوار ٹکٹ کا خواہشمند دکھائی نہیں دیا مسلم لیگ ن کی طرف سے گجرات کے دیگر حلقوں کیلئے سابق ایم این اے چوہدری عابد رضا‘ سابق ایم این اے چوہدری جعفر اقبال ‘سابق ایم پی ایز چوہدری شبیر کوٹلہ ‘ میاں طارق محمود ‘ نوابزادہ حیدر مہدی اور معین نواز وڑائچ کے ٹکٹ کنفرم ہونیکی اطلاعات ہیں جبکہ چوہدری مبشر حسین اور نوابزادہ غضنفر علی گل کو بھی قومی اسمبلی کی سیٹ پر الیکشن لڑنے کیلئے مسلم لیگ ن کی طرف سے گرین سگنل دیا جا چکا ہے چوہدری مبشر کے مقابلے چوہدری پرویز الٰہی اورغضنفر گل کے مقابلے میں چوہدری وجاہت حسین مسلم لیگ ق کے مضبوط امیدوار ہیں مسلم لیگ ق کے چوہدری مونس الٰہی نے بھی اپنے حلقے میں سیاسی سرگرمیاں تیز کر دی ہیں اسمبلیوں کی مدت پوری ہونے کے بعد حکمران جماعت مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والی کئی سرکردہ شخصیات کی طرف سے جماعت چھوڑنے کی اطلاعات بھی گردش کر رہی ہیں یہ امر قابل ذکر ہے کہ عام انتخابات میں ایک خواجہ سرا کی طرف سے بھی شہری حلقے سے قومی اسمبلی کی سیٹ پر الیکشن لڑنے کا اعلان کیا گیا ہے ۔

چناؤ شروع

مزید :

صفحہ اول -