چناری،گاؤں سربن تابانڈی سیداں سڑک پختگی کاکام5سالوں سے زیرالتوا

چناری،گاؤں سربن تابانڈی سیداں سڑک پختگی کاکام5سالوں سے زیرالتوا

  

مظفرآباد(بیورورپورٹ)چناری کے نواحی گاؤں سربن تا بانڈی سیداں 1 کلو میٹر سڑک پختگی کاکام گذشتہ پانچ سالوں سے التواٗء کا شکار ٹھیکیدار محکمہ شاہرات کے جملہ آفیسران کی ملی بھگت بنائی جانے والی سڑک میں نہ صرف ناقص میٹریل کا استعمال کیا جا رہا ہے بلکہ سڑک کی عدم پختگی اور تکمیل سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ان خیالات کا اظہار بانڈی سیداں کے معروف سیاسی و سماجی وتاجر شخصیت سید اسد حسین کاظمی نے چناری میں میڈیا نمائندگان کو دےئے گئے ایک بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ بانڈی سیداں تا سربن ایک کلو میٹر سڑک جسکی وزیر اعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے دوران اپوزیشن لیڈر منظوری دی تھی گذشتہ 5 سالوں میں نہ تو سڑک بن ،سکی اور نہ ہی اس کی پختگی ہو سکی ٹھیکیدار نے سڑک کا کام انتہائی سست روی سے شروع کر رکھا ہے جس سے بارشوں میں عوام علاقہ سربن، بانڈی سیداں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے انہوں نے کہا کہ آج بھی سڑک پر جو کام ہو رہا ہے اس میں ناقص میٹریل کا استعمال کیا جا رہا ہے جس سے سڑک پختہ ہونے کے کچھ ہی عرصہ میں بارشوں میں بہہ جانے کا خدشہ ہے محکمہ شاہرات جہلم ویلی کے آفیسران کی ملی بھگت سے ٹھیکیدار من مرضی سے کام کرتے ہیں اور ان پر محکمہ کی جانب سے کوئی چیک اینڈ بیلنس نہیں رکھا جاتا اور نہ ہی کام کا میعار اور میٹریل چیک کیا جاتا ہے جس سے وزیر اعظم کے حلقہ میں متعدد سڑکات تعمیر سے چند ماہ بعد کھنڈر بن چکی ہیں جو محکمہ کے لیے لمحہ فکریہ ہیں انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم، وزیر تعمیرات عامہ شاہرات ، چیف سیکرٹری کی متعدد بار اس جانب توجہ مبزول کروائی مگر کوئی شنوائی نہ ہو سکی آج ایک بار پھر ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں خدا راہ اس ایک کلو میٹر سڑک جسکو کئی سال لگ گئے کو فوری بہتر انداز میں بنوانے کے لیے محکمہ کو احکامات جاری کریں تاکہ عوام کی مشکلات کم ہو سکیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -