اثاثہ جات ریفرنس، استغاثہ کے گواہ مسعود الغنی پر جرح مکمل،سماعت ساڑھے 11 بجے تک ملتوی

اثاثہ جات ریفرنس، استغاثہ کے گواہ مسعود الغنی پر جرح مکمل،سماعت ساڑھے 11 بجے ...
اثاثہ جات ریفرنس، استغاثہ کے گواہ مسعود الغنی پر جرح مکمل،سماعت ساڑھے 11 بجے تک ملتوی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آ ن لائن)سابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کیخلاف اثاثہ جات ریفرنس میں استغاثہ کے گواہ مسعود الغنی پر جرح مکمل ہو گئی عدالت نے سماعت ساڑھے 11 بجے تک ملتوی کردی گئی،ساڑھے 11 بجے دوسرے گواہ محمد عظیم پر جرح کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں سابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کیخلاف اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت ہوئی، احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے ریفرنس کی سماعت کی ، استغاثہ کے گواہ اور تینوں ملزم عدالت میں پیش ہوئے۔

استغاثہ کے گواہ مسعود الغنی نے عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کرایا،گواہ کا تعلق بینک الفلاح سے ہے،گواہ نے عدالت کو بتایا کہ اسحاق ڈار کے بینک اکاﺅنٹ سے 25 لاکھ کی رقم منتقل ہوئی،عدالت نے گواہ مسعود الغنی پر جرح مکمل ہونے پر سماعت ساڑھے بجے تک ملتوی کردی،آج استغاثہ کے دوسرے گواہ محمد عظیم پر جرح کی جائے گی۔

دوران سماعت سعید احمد کے وکیل عدنان نے کہا کہ میں عمرے پر جانا چاہتا ہوں،اس پر جج محمد بشیر نے کہا کہ اس مرحلے پر آپ کیسے جا سکتے ہیں ،ٹرائل جاری ہے ،پہلے ہی سعید احمد کے سینئر وکیل حشمت حبیب نہیں آ رہے۔معاون وکیل نے کہا کہ حشمت حبیب بیمارہیں گزشتہ سماعت پر بھی ویل چیئر پر آئے تھے،جج محمد بشیر نے کہا کہ ایک وکیل بیمار ہے اور دوسرا عمرے پر جا رہا ہے، نیب پراسیکیوٹرعمران شفیق نے کہا کہ سپریم کورٹ کی ہدایت پر ٹرائل چل رہا ہے،یہ سب تاخیری حربے ہیں کیس کو چلنے نہیں دیاجا رہا،گزشتہ 4 سماعتوں پر گواہ محمد عظیم پر پر جرح مکمل نہ ہو سکی ۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے معاون وکیل سے استفسار کیا کہ حشمت حبیب کب تک آئیں گے؟اور کب جرح کریں گے ؟،اس پر معاون وکیل نے کہا کہ حشمت حبیب جیسے ہی بہتر ہوں گے آجائیں گے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -