تحریک انصاف کے اقدام سے بڑا آئینی بحران پیدا ہو سکتا ہے :سینئر تجزیہ کار

تحریک انصاف کے اقدام سے بڑا آئینی بحران پیدا ہو سکتا ہے :سینئر تجزیہ کار
تحریک انصاف کے اقدام سے بڑا آئینی بحران پیدا ہو سکتا ہے :سینئر تجزیہ کار

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سینئر تجزیہ کار حامد میرنے کہا کہ تحریک انصاف کی جانب سے نگران وزیراعلیٰ ناصر کھوسہ کام نام واپس لینے سے بڑا ڈیڈ لاک پیدا ہو سکتا ہے کیونکہ آئین کے مطابق نگران وزیراعلیٰ اور نگران وزیر اعظم کے متفقہ نام کو واپس لینے کیلئے آئینی راستہ نہیں ہے جس کی وجہ سے صورتحال بڑی پیچیدہ ہو جائے گی۔

جیونیوز سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے پاس اب آئینی طور پر کوئی راستہ نہیں ہے اس لئے اس وقت بڑا ڈیڈ لاک پیدا ہو سکتا ہے اور اس سے وہ لو گ کامیاب ہو جائیں گے جو ملک میں الیکشن ملتوی کرانا یاان میں تاخیر چاہتے ہیں، انہوں نے کہا وزیر اعلیٰ پنجاب اس حوالے سے آئینی ماہرین سے مشاور ت کر رہے ہیں لیکن ہم نے خود بھی سیاسی مبصرین اور آئینی ماہرین سے مشاورت کی ہے جنہوں نے بتایا ہے کہ آئین کی شق 124اور 124Aکے تحت ایک دفعہ جو نام حکومت اوراپوزیشن کی جانب سے مشترکہ طور پر دیدیا جائے اس کوواپس نہیں لیا جاسکتا ۔ انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف کے نام واپس لینے کی وجہ سے ڈیڈ لاک پیداہونے کے خدشہ پیدا ہو گیا ہے اور تحریک انصاف کے پاس آئینی طور پر اس حوالے سے اب کوئی راستہ نہیں بچا۔

مزید :

قومی -