نواز شریف کے ناصر سعید کھوسہ کے حوالے سے بیان اور شدید عوامی رد عمل پر نام واپس لیا :میاں محمود الرشید

نواز شریف کے ناصر سعید کھوسہ کے حوالے سے بیان اور شدید عوامی رد عمل پر نام ...
نواز شریف کے ناصر سعید کھوسہ کے حوالے سے بیان اور شدید عوامی رد عمل پر نام واپس لیا :میاں محمود الرشید

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈ ر اور پی ٹی آئی کے رہنما میاں محمود الرشید نے کہا ہے کہ نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے لئے ناصر سعید  کھوسہ کے نام پر اتنا شدید  عوامی ردعمل آنے کی امید نہیں تھی ، اتنا زیادہ ردعمل آنے کے بعد عمران خان کی سربراہی میں ہونیوالے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ناصرکھوسہ کانام واپس لے لیا جائے,نواز شریف کے ناصر کھوسہ کے حوالے سے بیان پر زیادہ ردعمل سامنے آیا جس پر نام واپس لینا پڑا۔

نجی ٹی وی چینل ’’جیونیوز‘‘  کے پروگرام ”کیپٹل ٹاک“ میں گفتگو کرتے ہوئے پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر اور پاکستان تحریک انصاف کے رہنما میاں محمود الرشید  نے کہا کہ عمران خان کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں کے پی کے اور پنجاب کے نگران سیٹ اَپ کے حوالے سے تفصیلی مشاورت ہوئی ہےاور اس مشاورت کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا کہ ناصر کھوسہ کا نام واپس لے کر مشاورت کے ساتھ نیا نام دیا جائے ،ناصر کھوسہ کے نام پرشدید ردعمل آنے کی وجہ یہ ہے کہ خاص طور پر 2013کے انتخابات کے تناظر میں نگران حکومتوں کا غیر متنازعہ ہونا نہایت اہم ہے ،اس لئے پارٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ اس نام کو واپس لے لیں اور چند ہی گھنٹوں میں ہم نیا نام دے دیں گے ۔میاں محمود الرشید کا کہنا تھا کہ ہم عام انتخابات کا شفاف انعقادچاہتے ہیں اور جلد ہی نیا نام دے دیں گے ، یہ ہماری طرف سے انتخابات ملتوی کرانے کی کوشش نہیں ہے، اگر ہم سے معاملہ حل نہ ہواتو معاملہ الیکشن کمیشن میں چلا جائے گا  اور وہ نام کا انتخاب کرلے گا ۔انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے سوشل میڈیا، الیکٹرانک میڈیا،اخبارات اور عوامی رائے عامہ میں بہت زیادہ ردعمل سامنے آرہا تھا جس کی وجہ سے ناصر کھوسہ کا نام واپس لیا گیاہے، پنجاب کے نگران حکمران کے حوالے سے ہم بیٹھ کر سوچ بچار کر رہے ہیں ،نئے نام کے حوالے سے فیصلہ کرنے کے بعد آج ہی میں دوبارہ رابطہ کروں گا مسلم لیگ ن سے یا چیف جسٹس سے کہ نئے نام کے لئے کوئی میٹنگ رکھ لیں ۔میاں محمود الرشید کا کہنا تھا کہنوازشریف نے بھی ناصر کھوسہ کے بارے میں کہا کہ وہ بہت اچھے ہیں ،میرے پرنسپل سیکرٹری رہے ہیں اور ان کو اپنا قریبی ہونے کا بیان دیا تھا،مختلف چیزیں ہیں جن کو لوگوں نے بنیاد بنا کر شدید رد عمل کا اظہار کیا اور کہا کہ اگر یہ نگران وزیر اعلیٰ بن گئے تو فری اینڈ فیئر اور شفاف الیکشن نہیں ہوں گے ، ان کا تو ایک پورا دھڑا ہے   جس کی وجہ سے اتنا شدید ردعمل سامنے آیا اور ہمیں اپنا فیصلہ واپس لینا پڑا۔

مزید :

قومی -