یکم جون سے تیل قیمتیں بڑھنے کا امکان عوام کو لوٹنے کا نیا منصوبہ تیار

یکم جون سے تیل قیمتیں بڑھنے کا امکان عوام کو لوٹنے کا نیا منصوبہ تیار

  

ملتان ( سٹاف رپورٹر) وفاقی حکومت کی طرف سے عوام کو عید الفطر کا تحفہ ‘مہنگائی کا ایک اور طوفان آنے کو تیار‘پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں یکم جون کو ایک بار پھر بڑھانے کی تیاریاں‘ پٹرول 118روپے فی لیٹر اور ہائی سپیڈ ڈیزل 134روپے ہونے کا امکان ہے ۔ عوام کو لوٹنے کا منصوبہ تیار کرلیا گیا(بقیہ نمبر45صفحہ7پر )

۔آئل مارکیٹنگ کمپنیوں اور پٹرولیم ڈیلرز نے پٹرول و ڈیزل سٹاک کرلیا ۔ایک بار پھر اربوں روپے ”کھرے “کرنے کی تیاریاں کرلیں ۔تفصیل کے مطابق تحریک انصاف کی حکومت مسلسل مہنگائی میں اضافے پر اضافہ کئے جا رہی ہے ۔سوئی گیس‘ بجلی‘ سی این جی ‘ پٹرول و ڈیزل کی قیمتوں میں خصوصاً بار بار اضافہ پر اضافہ کیاجا رہا ہے ۔ گزشتہ ماہ بھی پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں بڑھائیں اور سپر پٹرول 109روپے فی لیٹر اور ہائی سپیڈ ڈیزل 123روپے فی لیٹر ہو گیا جس کی بنا پر مہنگائی کا ایک اور طوفان آیا اور ہر چیز مہنگی ہوگئی ۔ اب پھر یکم جون کو سپرپٹرول کی قیمت 9روپے فی لیٹر بڑھا کر نئی قیمت 118روپے فی لیٹراور ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 11روپے فی لیٹر بڑھا کر نئی قیمت 134روپے فی لیٹر مقرر کرنے کی تیاریاں کر لی گئی ہیں۔اوگرانے سمری پٹرولیم ڈویژن کو بھجوا ئی اور پٹرولیم ڈویژن نے وفاقی وزارت خزانہ کو یہ سمری آگے منظوری کے لئے بھجوائی ہے ۔ذرائع کے مطابق پٹرول کی قیمتیں ہر ماہ بڑھا کر اکتوبر 2019تک 150روپے فی لیٹر تک لے جانے کا منصوبہ بنا یاگیا ہے ۔ ملکی تاریخ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اس قدر اضافے کی مثال نہیں ملتی ۔ دوسری جانب معلوم ہوا ہے کہ یکم جون کو قیمتوں میں ممکنہ اضافے کے امکان کے پیش نظر پٹرولیم ڈیلرز اور آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے پٹرول و ڈیزل ذخیرہ کرلیا ہے تاکہ قیمتیں بڑھنے کے بعد نئی قیمتوں پر فروخت کرکے ناجائز منافع کمایا جاسکے ۔گزشتہ ماہ بھی آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے پٹرول و ڈیزل ذخیرہ کرکے قیمتوں میں اچانک خاطر خواہ اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کراکر ایک رات میں ہی اربوں روپے ”کھرے “ کر لئے تھے اور یہ سب اہم حکومتی شخصیات کی ملی بھگت سے ہوا تھا ۔ اب پھر وہی کھیل کھیلا جا رہا ہے۔اس صورتحال میں مہنگائی اور لوٹ مار کا سارا بوجھ عوام پر ہی پڑے گا۔

تیل ‘ مہنگا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -