ملکی ترقی کےلئے تعلیم پر کام کرنے کی ضرورت ہے، شوبز شخصیات

ملکی ترقی کےلئے تعلیم پر کام کرنے کی ضرورت ہے، شوبز شخصیات

  

لاہور ( فلم رپورٹر)شوبزکے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ حکومتی سطح پر صرف باتیں نہیں بلکہ ایکشن کی ضرورت ہوتی ہے۔زبانی جمع خرچ سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔شوبز شخصیات کا کہنا ہے کہ قوم و ملک کی ترقی کے لئے تعلیم پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمارا لٹریسی ریٹ 58 فیصد ہے، دو کڑور بچے سکولوں سے باہر ہیں، ان سب کو اسکولوں میں داخل کرانا ہے ۔ انہوںنے کہاکہ تعلیم کے معیار کو بہتر کرنا ہے۔حکومت جو کہہ رہی ہے اسے وہ کر کے بھی دیکھانا ہے۔ انہوںنے کہاکہ ہمیں تعلیم کے معیار سے لے کر بچوں کو ہنر سکھانے تک سب کام کرنے ہیں۔ ۔خرم شیراز ریاض،شاہد حمید،معمر رانا،مسعود بٹ،حسن عسکری ،شانسید نور،میلوڈی کوئین آف ایشیاءپرائڈ آف پرفارمنس شاہدہ منی،صائمہ نور،میگھا،ماہ نور،انیس حیدر،ہانی بلوچ،یار محمد شمسی صابری،سہراب افگن ،ظفر اقبال نیویارکر،عذرا آفتاب،حنا ملک،انعام خان ،فانی جان،عینی طاہرہ،عائشہ جاوید،میاںراشد فرزند،سدرہ نور،نادیہ علی،شین،سائرہ نسیم،صبا ءکاظمی، ،سٹار میکر جرار رضوی،آغا حیدر،دردانہ رحمان ،ظفر عباس کھچی ،سٹار میکر جرار رضوی ،ملک طارق،مجید ارائیں،طالب حسین،قیصر ثنا ءاللہ خان ،مایا سونو خان،عباس باجوہ،مختار چن،آشا چوہدری،اسد مکھڑا،وقا ص قیدو، ارشدچوہدری،چنگیز اعوان،حسن مراد،حاجی عبد الرزاق،حسن ملک،عتیق الرحمن ،اشعر اصغر،آغا عباس،صائمہ نور،خالد معین بٹ ،مجاہد عباس،ڈائریکٹر ڈاکٹر اجمل ملک،کوریوگرافر راجو سمراٹ،صومیہ خان،حمیرا چنا ،اچھی خان،شبنم چوہدری،محمد سلیم بزمی،سفیان ،انوسنٹ اشفاق،استاد رفیق حسین،فیاض علی خاں،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم اور نجیبہ بی جی نے کہا کہ حکومت چلانا مشکل کام ہوتا ہے ہمیں سب کو دیکھ کر چلنا ہوتا ہے۔حکومت کو صوبائی سطح پر تعلیمی کانفرنس کا انعقاد کرنا چاہیے جس میں تعلیم کے حوالے سے بہت سے اہم فیصلے کئے جائیں ۔حکومت کو جاننے کی کوشش کرنی چاہیے کہ بچوں کو والدین سکول میں کیوں نہیں داخل کرواتے ۔ملک کی ترقی کے لئے زیادہ سے زیادہ تعلیمی شعبے پر توجہ دینا ہوگی ۔یہ خوشی کی بات ہے کہ پاکستان میں تعلیم میں بہتری آرہی ہے۔انہوںنے کہاکہ بہت سے کام ابھی تعلیم کے میدان میں کرنے ہیں، کئی چیلنجز کا سامنا ہے، لوگ تعلیم کو بہتر بنانے کےلئے اپنا کردار ادا کر رہے ہیں۔

مزید :

کلچر -