کراچی سے کشمور تک زمینوں کی لوٹ مار جاری ہے، سندھ ہائیکورٹ

کراچی سے کشمور تک زمینوں کی لوٹ مار جاری ہے، سندھ ہائیکورٹ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ نے زمین کی غیر قانونی الاٹمنٹ کیس میں ریمارکس دیئے ہیں کہ کراچی سے کشمور تک سندھ کی زمینوں کی لوٹ مار جاری ہے۔بدھ کوسندھ ہائیکورٹ میں وزیراعلی سندھ انسپکشن ٹیم کے چئیرمین عبدالسبحان میمن اور دیگر کے خلاف نیب انکوائری سے متعلق معاملہ کی سماعت ہوئی۔تفتیشی افسر نے بتایا کہ ملزمان نے جامشورو میں 7 ایکڑ رفاہی زمین غیرقانونی طور پر قادر بخش شورو کو الاٹ کی جو مفرور ہے۔ عدالت نے نیب حکام پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ قادر بخش جامشورو حیدرآباد میں رہتا ہے اور آپ ابھی تک اسے گرفتار نہیں کرسکے۔چیف جسٹس ہائی کورٹ احمد علی ایم شیخ نے ریمارکس دیئے کہ سندھ کی زمینوں کی ایسے ہی لوٹ مار جاری ہے، کراچی سے کشمور تک یہ سلسلہ جاری رہا ہے۔ عدالت نے پوچھا کہ اس وقت وزیر کون تھا۔ وکیل نے بتایا کہ موجودہ پیر پگارا صبغت اللہ راشدی اس وقت ریونیو کے وزیر تھے۔عدالت نے زمین الاٹ کرنے سے متعلق ہائیکورٹ کے فیصلے کی کاپی طلب کرتے ہوئے مزید کارروائی 26 جون تک ملتوی کردی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -