کرونا فلمی صنعت کی ترقی میں بڑی رکاوٹ بن گیا،شوبز شخصیات

کرونا فلمی صنعت کی ترقی میں بڑی رکاوٹ بن گیا،شوبز شخصیات

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے فلم،ٹی وی اور تھیٹر تینوں شعبوں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ چکا ہے۔اس وبا کے باعث چھوٹے فنکار اور تکنیک کار فاقہ کشی پر مجبور ہیں۔فلمی صنعت کی بحالی کے سفر میں رکاوٹ آگئی ہے۔ایک محتاط اندازے کے مطابق کرونا وائرس اور لاک ڈاؤن کی وجہ سے فلم،ٹی وی اور تھیٹر کو 50کروڑ سے زائد کا نقصان ہوچکا ہے۔تھیٹر سے وابستہ لوگ کبھی سڑکوں پر اور کبھی پریس کانفرنس میں سراپا احتجاج نظر آتے ہیں۔شاہد حمید،معمر رانا،مسعود بٹ،حسن عسکری شان سید نور،میلوڈی کوئین آف ایشیاء پرائڈ آف پرفارمنس شاہدہ منی،صائمہ نور،میگھا،ماہ نور،انیس حیدر،ہانی بلوچ،یار محمد شمسی صابری،سہراب افگن،ظفر اقبال نیویارکر،عذرا آفتاب،حنا ملک،انعام خان،فانی جان،عینی طاہرہ،عائشہ جاوید،میاں راشد فرزند،سدرہ نور،نادیہ علی،شین،سائرہ نسیم،صبا ء کاظمی،اکرام اداس،سٹار میکر جرار رضوی،آغا حیدر،دردانہ رحمان،ظفر عباس کھچی،سٹار میکر جرار رضوی،ملک طارق،مجید ارائیں،طالب حسین،قیصر ثنا ء اللہ خان،مایا سونو خان،عباس باجوہ،مختار چن،آشا چوہدری،اسد مکھڑا،وقا ص قیدو، ارشدچوہدری،فیاض علی خاں،پروڈیوسر شوکت چنگیزی،ظفر عباس کھچی،ڈی او پی راشد عباس،پرویز کلیم،نیلم منیر خان،حمیرا،عینی رباب،عروج،روبی انعم،اظہر بٹ اور نجیبہ بی جی نے کہا کہ جب تمام شعبوں کو کام کی اجازت مل چکی ہے تو فلم اور ٹیلیوژن کے ساتھ ساتھ تھیٹر کو بھی کھولنے کی اجازت دے دی جائے۔غریب فنکار کرونا سے تو شاید بچ جائیں مگر بھوک سے یقیناً مر جائیں گے۔

مزید :

کلچر -