کورونا، ایک ہی روز 96ہلاکتیں، لاک ڈاؤن مزید نرم یا دوبارہ سخت کرنے کا فیصلہ پیر کو ہوگا، ریلوے کا مزید ٹرینیں بحال کرنے کا فیصلہ، پی آئی اے کی انٹر نیشنل پروازیں بھی شروع، سندھ میں پبلک ٹرانسپورٹ شروع کرنے کیلئے ایس او پیز تیار

  کورونا، ایک ہی روز 96ہلاکتیں، لاک ڈاؤن مزید نرم یا دوبارہ سخت کرنے کا فیصلہ ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) جمعہ کے روز ملک بھر کورونا سے ریکارڈ 96اموات ہوئیں جبکہ کورونا وبا کے 2363 نئے مریض سامنے آئے ملک بھر میں 2 ہزار سے زائد لوگ صحت یاب بھی ہوگئے تفصیلات کے مطابق جمعے کا دن پاکستان میں کورونا کے حملوں کے حوالے سے ہولناک ترین دن رہا جس میں چوبیس گھنٹوں کے دوران، 96 افراد جاں بحق ہو گئے اور 2363 نئے کیسز رپورٹ ہوئے اس سے کورونا سے اموات کی مجموعی تعداد 1379 ہو گئی جبکہ نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 65059 تک پہنچ گئی ہے سب سے زیادہ اموات خیبرپختونخوا میں سامنے آئی ہیں جہاں کورونا سے 445 افراد انتقال کرچکے ہیں جب کہ سندھ میں 427 اور پنجاب میں 410 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔اس کے علاوہ بلوچستان میں 60، اسلام آباد 23، گلگت بلتستان میں 9 اور آزاد کشمیر میں مہلک وائرس سے 5 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔جمعہ کے روز ملک بھر سے کورونا کے مزید 2363 کیسز اور 96 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جن میں سندھ میں 804 کیسز 31 ہلاکتیں، پنجاب سے 927 کیسز 29 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 225 کیسز 13 ہلاکتیں، بلوچستان 312 کیسز 19 ہلاکتیں، اسلام آباد 85 کیسز 4 ہلاکتیں، آزادکشمیر سے 8 کیسز اور گلگت بلتستان سے 2 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔جمعہ کو پنجاب سے کورونا کے مزید 927 کیسز اور 29 ہلاکتیں سامنے آئی ہیں جس کی تصدیق پی ڈی ایم اے نے کی۔صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی کے مطابق صوبے میں کورونا کے مریضوں کی مجموعی تعداد 22964 اور ہلاکتیں 410 ہوگئی ہیں۔صوبے میں اب تک کورونا سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد 6338 ہوگئی ہے۔بلوچستان میں کورونا کے مزید 312 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں اور 19 ہلاکتیں بھی سامنےٓآئیں جس کی تصدیق محکمہ صحت کی جانب سے کی گئی ہے۔محکمہ صحت کے مطابق صوبے میں کل کیسز کی تعداد 3928 ہوگئی ہے جب کہ اب تک 60 اموات ہوچکی ہیں۔اس کے علاوہ صوبے میں کورونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 1354ہے۔وفاقی دارالحکومت سے آج کورونا وائرس کے مزید 85 کیسز اور 4 اموات سامنے آئی ہیں۔ ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کے مطابق اسلام آباد میں کیسز کی مجموعی تعداد 2100 جب کہ اموات 23 ہو چکی ہیں۔اسلام آباد میں اب تک کورونا وائرس سے 163 مریض صحت یاب بھی ہو چکے ہیں۔آزاد کشمیر میں آج کورونا کے مزید 8 کیسز سامنے آئے ہیں جس کی تصدیق سرکاری پورٹل پر کی گئی ہے۔حکومتی اعدادو شمار کے مطابق علاقے میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 227 ہوگئی ہے جب کہ علاقے میں اب تک وائرس سے 5 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔سرکاری پورٹل کے مطابق آزاد کشمیر میں کورونا سے اب تک 99 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔سندھ سے جمعرات کو کورونا کے مزید 804 کیسز اور 31 ہلاکتیں رپورٹ ہوئیں جن کی تصدیق محکمہ صحت سندھ کی جانب سے کی گئی۔سندھ میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 26113 اور اموات 427 ہوگئی ہیں۔ اب تک 12750 کورونا کے مریض صحتیاب ہوچکے ہیں۔اعداد و شمار کے مطابق صرف کراچی میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 20827 ہے جبکہ کراچی میں کورونا سے 353 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔خیبر پختونخوا میں جمعے کو مزید 13 افراد جان کی بازی ہار گئے جس کے بعد صوبے میں ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 445 تک جا پہنچی ہے۔صوبائی محکمہ صحت کے مطابق جمعے کو کے پی میں مزید 225 مریض سامنے آئے جس کے بعد متاثرہ مریضوں کی تعداد 9067 ہوگئی جب کہ اب تک 2731 افراد کورونا وائرس سے صحت یاب بھی ہو چکے ہیں۔گلگت بلتستان سے جمعے کو کورونا کے مزید 2 کیسز سامنے آئے جس کے بعد گلگت بلتستان میں کورونا کے کیسز کی تعداد 660 ہوگئی ہے جب کہ ہلاکتوں کی تعداد 9 ہے۔محکمہ صحت گلگت بلتستان کیمطابق اب تک 477 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں

پاکستان ہلاکتیں

نیویارک /لندن/پیرس (آئی این پی) دنیا بھر میں کورونا وائرس کے وار جاری‘ متاثرہ افراد کی تعداد 59 لاکھ 9 ہزار 3 ہو چکی ہے جبکہ اس سے ہلاکتیں 3 لاکھ 62 ہزار 81 ہو گئیں۔کورونا وائرس کے دنیا بھر میں 29 لاکھ 64 ہزار 971 مریض اب بھی اسپتالوں اور قرنطینہ مراکز میں زیرِ علاج ہیں، جن میں سے 53 ہزار 972 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 25 لاکھ 81 ہزار 951 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔امریکا تاحال کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے جہاں ناصرف کورونا مریض بلکہ اس سے ہلاکتیں بھی اب تک دنیا کے تمام ممالک میں سب سے زیادہ ہیں۔امریکا میں کورونا وائرس سے اب تک 1 لاکھ 3 ہزار 330 افراد موت کے منہ میں پہنچ چکے ہیں جبکہ اس سے بیمار ہونے والوں کی مجموعی تعداد 17 لاکھ 68 ہزار 461 ہو چکی ہے۔امریکا کے اسپتالوں اور قرنطینہ مراکز میں 11 لاکھ 66 ہزار 406 کورونا مریض زیرِ علاج ہیں جن میں سے 17 ہزار 202 کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ 4 لاکھ 98 ہزار 725 کورونا مریض اب تک شفایاب ہو چکے ہیں۔کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد کے حوالے سے ممالک کی فہرست میں برازیل دوسرے نمبر پر پہنچ گیا ہے جہاں کورونا کے مریضوں کی تعداد 4 لاکھ 38 ہزار 812 تک جا پہنچی ہے جبکہ یہ وائرس 26 ہزار 764 زندگیاں نگل چکا ہے۔کورونا وائرس سے روس میں کل اموات 4 ہزار 142 ہو گئیں جبکہ اس کے مریضوں کی تعداد 3 لاکھ 79 ہزار 51 ہو چکی ہے۔اسپین میں کورونا کے اب تک 2 لاکھ 84 ہزار 986 مصدقہ متاثرین سامنے آئے ہیں جب کہ اس وبا سے اموات 27 ہزار 119 ہو چکی ہیں۔برطانیہ میں کورونا سے اموات کی تعداد 37 ہزار 837 ہوگئی جبکہ کورونا کے کیسز کی تعداد 2 لاکھ 69 ہزار 127 ہو گئی۔اٹلی میں کورونا وائرس کی وبا سے مجموعی اموات 33 ہزار 142 ہو چکی ہیں، جہاں اس وائرس کے اب تک کل کیسز 2 لاکھ 31 ہزار 732 رپورٹ ہوئے ہیں۔فرانس میں کورونا وائرس کے باعث مجموعی ہلاکتیں 28 ہزار 662 ہوگئیں جبکہ کورونا کیسز 1 لاکھ 86 ہزار 238 ہو گئے۔جرمنی میں کورونا سے کل اموات کی تعداد 8 ہزار 570 ہو گئی جبکہ کورونا کے کیسز 1 لاکھ 82 ہزار 452 ہو گئے۔بھارت میں کورونا وائرس سے 4 ہزار 711 ہلاکتیں ہو چکی ہیں جبکہ اس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 1 لاکھ 65 ہزار 799 ہو گئی۔ترکی میں کورونا وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 4 ہزار 461 ہو گئی جبکہ کورونا کے کل کیسز 1 لاکھ 60 ہزار 979 ہو گئے۔ایران میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی کل تعداد 7 ہزار 627 ہو گئی جبکہ کورونا کے کل کیسز 1 لاکھ 43 ہزار 849 ہو گئے۔۔سعودی عرب میں کورونا وائرس سے اب تک کل اموات 441 رپورٹ ہوئی ہیں جبکہ اس کے مریضوں کی تعداد 80 ہزار 185 تک جا پہنچی ہے۔

عالمی ہلاکتیں

اسلام آباد، کراچی (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے قومی رابطہ کمیٹی کا اجلاس اتوار 31 مئی کو طلب کرلیا، اجلاس میں کوروناوائرس کے خلاف اقدامات پر غور ہوگا اور فیصلہ کیا جائے گا کہملک بھر میں لاک ڈاؤن مزید نرم کیا جائے یا دوبارہ سخت کردیا جائے؟ کس شعبے کو کاروبار میں مزید رعایت دی جائے؟ایس اوپیز پر کس طرح عمل درآمد کرایا جائے31 مئی کو ہونے والے قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں تمام صوبے اپنی سفارشات وفاقی حکومت کے سامنے رکھیں گے جس کے بعد وزیراعظم عمران خان حتمی فیصلہ کریں گے۔اس سے قبل 7مئی کو ہونے والے قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں 9 مئی سے لاک ڈاؤن میں مزید نرمی کا اعلان کیا گیا تھا اور وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نے 9 مئی سے مرحلہ وار لاک ڈاؤن کو کھولنے کا فیصلہ کیا ہے، ہم نے جو فیصلہ کیا وہ تمام صوبوں کے ساتھ مل کر کیا ہے۔ دریں اثنا پاکستان ریلوے نے کورونا وائرس کے باعث نافذ لاک ڈاؤن میں نرمی کے بعد مزید ٹرینیں بحال کرنے کا فیصلہ کیا ہے مزید ٹرینیں بحال کرنے کا اعلان وزیر ریلوے شیخ رشید کل لاہور میں کریں گے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ مزید ٹرینیں بحال کرنے کا فیصلہ مسافروں کی بڑھتی ہوئی تعداد کے باعث کیا گیا اور اس سلسلے میں شیخ رشید نے وزیراعظم سے مشاورت مکمل کرلی ہے جب کہ مزید مشاورت کیلئے کل ریلوے حکام کا اجلاس طلب کیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹرینوں کی بحالی کا معاملہ نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کے اجلاس میں بھی زیربحث آیا ہے۔دوسری جانب ٹرینوں میں حفاظتی تدابیر مزید سخت کرنے کی گائیڈ لائنز پر مشاورت جب کہ آن لائن بکنگ، سیٹوں میں فاصلہ اور مسافروں کی مانیٹرنگ کا طریقہ کار طے کیا جائے گا۔تمام ریلوے اسٹیشنوں پر حفاظتی اقدامات مزید سخت کیے جائیں گے جب کہ ٹکٹ کلکٹر، ایس ٹیز اور پولیس سمیت ریلوے عملے کے لیے ماسک اور اقدامات حفاظتی تدابیر طے ہوں گی۔جیونیوز سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر ریلوے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ یکم جون سے مزید 10 مسافر ٹرینیں چلا رہے ہیں جس کے بعد 142 مسافر ٹرینوں میں سے 40 ٹرینیں چلنا شروع ہو جائیں گی۔انہوں نے کہا کہ ٹرینوں کو طے شدہ ایس او پیز کے تحت چلایا جائے گا، انٹرنیٹ کیذریعے بکنگ کے ساتھ ساتھ بکنگ دفاتر بھی کھلے رہیں گے، ٹرینوں کی بندش سے ریلوے کو ماہانہ 5 ارب روپے کا نقصان ہو رہا تھا۔پاکستان نے کورونا وائرس کی وبائی صورتحال کے باعث بند ہونے والا بین الاقوامی فلائٹ آپریشنگزشتہ رات سے بحال کر دیا ہے۔سول ایوی ایشن ڈویڑن کے ترجمان کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وفاقی حکومت کے فیصلے کی روشنی میں پاکستان سے بین الاقوامی پروازوں کا سلسلہ تیس مئی سے شروع ہو رہا ہے۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی نے تمام پروازیں کھولنے کی اجازت دے دی،پروازوں کو کھولنے سے متعلق فیصلہ وفاقی حکومت کی جانب سے کیا گیا،شیڈول،نان شیڈول اور چارٹرڈ فلائٹس آپریٹ ہو سکیں گی،پروازیں جمعہ کی رات بارہ بجے سے کورونا ایس او پیز کے ساتھ چلانے کا فیصلہ کیا گیا،قومی اور بین الاقوامی پروازیں گوادر اور تربت کے علاؤہ سب جگہ سے آپریٹ ہونگی۔ترجمان ایوی ایشن ڈویژن عبد الستار کھوکھر کے مطابق جہازوں کو ڈس انفیکشن لازمی قرار دیا گیاہے۔ دوسری طرف سندھ میں آن لائن ٹیکسی سمیت پبلک ٹرانسپورٹ کھولنے کیلئے درکار معیاری ضابطہ کار (ایس او پیز) تیار کرلیے گئے۔ سندھ کے وزیر ٹرانسپورٹ اویس شاہ کا کہنا ہے کہ صوبے میں پبلک ٹرانسپورٹ کھولنے سیمتعلق فیصلہ کل ٹاسک فورس میں ڈاکٹرزکی ہدایات کی روشنی میں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سماجی دوری کے اصول پر عملدرآمد کے ساتھ اور سینیٹائزیشن کے ساتھ ٹرانسپورٹ کھولنا چاہتے تھے۔اویس شاہ نے کہا کہ کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے بعد ڈاکٹرز کا مشورہ ہے کہ لاک ڈاؤن برقرار رکھا جائے۔اویس شاہ نے بتایا کہ آن لائن بس اور ٹیکسی سمیت پبلک ٹرانسپورٹ کے ایس او پیز تیار کرلیے گئے ہیں، ڈاکٹرز کی ہدایات کی روشنی میں اگر اجازت ملی تو فاصلہ اور احتیاط ضروری ہوگی۔

لاک ڈاؤن

مزید :

صفحہ اول -