سیاہ فام کی ہلاکت کیخلاف ہنگامے پورے امریکہ میں پھیل گئے

سیاہ فام کی ہلاکت کیخلاف ہنگامے پورے امریکہ میں پھیل گئے

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکہ کی شمال وسطی ریاست منی سوٹا کے شہر منا پولیس میں ایک غیر مسلح گرفتارملزم جاج فلائیڈ کی پولیس افسروں کے ہاتھوں ہلاکت پر شروع ہوے والے ہنگامے پورے مک میں پھیل گئے ہیں۔ احتجاجی مظاہروں میں پولیس کے خلاف غم و غصہ کا اظہار کیا جا رہا ہے اور تازہ اطلاعات کے مطابق منا پولیس کے مرکزی پولیس اسٹیشن کو نذرآتش کر دیا گیا ہے۔ جہاں پولیس کے ہاتھوں ملزم کی ہلاکت ہوئی تھی۔ تاہم اس پولیس سٹیشن کو حملے سے قبل خالی کرا لیا گیا تھا جس کے باعث کوئی جان نقصان نہیں ہوا۔ صدر ٹرمپ نے اس پولیس کارروائی کی شدید مذمت کی، تاہم بعدمیں ہنگامہ آرائی اور لوٹ مار کرنے والوں کو ٹھگ قرار دیا اور ریاستی حکام کو پیشکش کی کہ وفاقی انتظامیہ ہنگاموں پر قابو پانے کے لئے انہیں فوج سمیت ہر طرح کی کمک فراہم کرنے کو تیار ہے۔ سیاہ فام ملزم کی ہلاکت میں ملوث چاروں پولیس افسروں کو برطرف کر دیا گیا ہے لیکن ملزم کے خاندان کا مطالبہ ہے کہ ان پر قتل کے الزام میں مقدمہ چلایا جائے۔ پولیس نے ہنگاموں کی کوریج کرنے والے منا پولیس میں سی این این کے ایک نمائندے عمر جمینز اور ان کی ٹیم کو گرفتار کرلیا اور بعد میں رہا کردیا۔ منی سوٹا کے گورنر نے اس گرفتاری پر معذرت کرلی۔ صدر ٹرمپ نے ایک تازہ ٹوئیٹر پیغام میں بتایا ہے کہ منا پولیس اور جڑواں شہر سینٹ پال میں پانچ سو نیشنل گارڈ بھیج دیئے گئے ہیں جو ریاستی انتظامیہ کو امن و امان قائم کرنے میں مدد فراہم کریں گے۔ سی این این کی اطلاع کے مطابق منی سوٹاکی ریاست کے بعد پورے ملک میں متعدد مقامات پر گزشتہ تین روز سے احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے اس دوران جمعرات کے روز ایک ریاست اوہائیو میں احتجاجی مظاہروں کے دوران کولمبس میں واقع ریاستی ہیڈکوارٹر کو کافی نقصان پہنچا ہے۔ خاتون اول میلانیاٹرمپ نے مظاہرین سے درخواست کی ہے کہ وہ توڑ پھوڑ سے پرہیز کریں اور پرامن طریقے سے احتجاج کریں۔ صدر ٹرمپ نے جمعرات کی رات گئے منی سوٹا کے گورنر ٹم والز سے فون پر ہنگاموں کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا اور بعدمیں ایک بیان میں انہوں نے بتایا کہ وہاں ریاستی قیادت کا مکمل فقدان ہے۔ انہوں نے لوٹ مار کرنے والوں کو خبردار کیا کہ اگر انہوں نے ایسا کرنے کی کوشش کی تو نیشنل گارڈ ان پر گولی چلانے سے احتراز نہیں کریں گے۔ منا پولیس میں ہنگاموں کا سلسلہ منگل کے روز شروع ہوا جب ملزم پر پولیس تشدد کی ویڈیو جاری ہوئی اور بعد میں اس کی ہلاکت کی اطلاع نشر ہوئی۔

امریکہ ہنگامے

مزید :

صفحہ اول -